آسیب زدہ سکول میں قرنطینہ سنٹر، کورونا کے ایک مشتبہ مریض نے جنات کے خوف سے خود کشی کرلی

آسیب زدہ سکول میں قرنطینہ سنٹر، کورونا کے ایک مشتبہ مریض نے جنات کے خوف سے ...
آسیب زدہ سکول میں قرنطینہ سنٹر، کورونا کے ایک مشتبہ مریض نے جنات کے خوف سے خود کشی کرلی

  

ممبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی ریاست مہاراشٹر میں آسیب زدہ سکول میں قرنطینہ کیے جانے والے کورونا کے مشکوک مریض نے جنات کے خوف سے خود کشی کرلی۔

کرنول کے گاؤں کوسی گی کے سرکاری سکول کے بارے میں مشہور ہے کہ یہ آسیب زدہ ہے ، مقامی لوگوں کی جانب سے کئی بار یہاں غیر مرئی حرکات کی شکایت کی گئی ہے تاہم مہاراشٹر حکومت نے اس کو کورونا کیلئے قرنطینہ سنٹر بنادیا ہے۔مذکورہ سکول میں 113 مشتبہ مریضوں کو قرنطینہ کیا گیا ہے تاہم جمعرات کو ان میں سے نے خود کشی کرلی۔

پولیس رپورٹ کے مطابق سکول میں قرنطینہ ہونے والے 47 سالہ مزدور نے پہلے تو یہاں سے بھاگنے کی کوشش کی لیکن اس میں ناکامی پر اس نے سکول کی کھڑکی سے اپنا کپڑا باندھ کر پھندا بنایا اور اس سے جھول گیا۔

دوسری جانب قرنطینہ سینٹر کے انچارج نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ مذکورہ شخص گھر جانے کا خواہش مند تھا اور اُس نے فرار ہونے کی بھی کوشش کی مگر ہم نے اُسے روک لیا جس کے بعد وہ اپنے کمرے میں گیا اور تھوڑی دیر بعد ہمیں مرنے کی اطلاع ملی۔

قرنطینہ سنٹر میں موجود دیگر مریضوں کا کہنا ہے کہ خود کشی کرنے والا شخص جنات سے خوفزدہ تھا، کئی بار ہم نے بھی یہاں پر اسرار حرکات دیکھی ہیں جس کی وجہ سے خوف کا عالم ہے، اسی خوف کے باعث ہمارے ساتھی نے اپنی زندگی ختم کی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -