بھارت سفارتی تعلقات بحال کرے تو افغان فورسز کو تربیت کیلئے نئی دہلی بھیج سکتے ہیں:ملا یعقوب

بھارت سفارتی تعلقات بحال کرے تو افغان فورسز کو تربیت کیلئے نئی دہلی بھیج ...

  

       کابل (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) افغانستان کے وزیر دفاع ملا یعقوب نے کہا کہ انھیں انڈیا کے ساتھ دفاعی تعلقات بحال کرنے میں کوئی مسئلہ نہیں ہے مگر انھوں نے اس بات پر زور دیا کہ پہلے دونوں حکومتوں کے درمیان سفارتی تعلقات بحال ہونے چاہئیں انھوں نے انڈین ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہا ’اگر دونوں حکومتوں کے درمیان تعلقات معمول پر آتے ہیں تو طالبان افغان سکیورٹی فورسز کو تربیت کے لیے انڈیا بھیجنے کے لیے تیار ہے۔ملا یعقوب نے بھارتی حکومت سے کابل میں اپنا بند سفارت خانہ دوبارہ کھولنے اور طالبان سفیر کو نئی دہلی میں افغان سفارت خانہ سنبھالنے کی اجازت دینے کا بھی مطالبہ کیا۔وزیر دفاع نے کہا ہے کہ اگر انڈیا اپنے سفارتی عملے کو افغانستان واپس بھیجتا ہے تو طالبان کسی بھی قسم کی حفاظتی ضمانت دینے کے لیے تیار ہیں۔ اس سے قبل یہ بات دوحہ میں طالبان کے ترجمان سہیل شاہین نے بھی کہی تھی۔ملا یعقوب نے  زور دے کر کہا کہ طالبان حکومت کی جانب سے پاکستان یا انڈیا کو افغانستان کی سرزمین کو ایک دوسرے کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی اور امید ظاہر کی کہ دونوں ممالک اپنے اختلافات مذاکرات اور بات چیت کے ذریعے حل کریں گے۔طالبان کے وزیر دفاع نے کہا ہے کہ ان کا القاعدہ سے کوئی تعلق نہیں ہے اور افغانستان میں نام نہاد شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کو کچل دیا گیا ہے۔انھوں نے پاکستان اور ڈیورنڈ لائن کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں کہا کہ ان کے پاکستان کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں اور اگر وقتاً فوقتاً ڈیورنڈ لائن پر کوئی واقعہ ہوتا ہے تو اسے زیادہ سنجیدگی سے نہیں لینا چاہیے۔ملا یعقوب نے امریکہ سے بھی افغانستان میں طالبان حکومت کے لیے مسائل پیدا نہ کرنے اور اس کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کرنے کا مطالبہ کیا۔تاہم انڈیا کو طالبان کی صفوں میں پاکستانی انٹیلی جنس اور انتہا پسند گروپوں کے اثر و رسوخ پر تشویش ہے اور وہ نہیں چاہتا کہ افغان سرزمین کا استعمال انڈیا کے خلاف ہو۔لیکن طالبان کا زور دے کر کہنا ہے کہ وہ دنیا کے کسی بھی ملک یا گروہ کو افغان سرزمین کسی دوسرے ملک کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔

ملا یعقوب

مزید :

صفحہ اول -