بحریہ ٹاؤن کراچی سولر انرجی کو اپنانے والا پہلا رئیل اسٹیٹ ڈویلپر

بحریہ ٹاؤن کراچی سولر انرجی کو اپنانے والا پہلا رئیل اسٹیٹ ڈویلپر

  

کراچی(خصوصی رپورٹ) بحریہ ٹاؤن کراچی پاکستان کا پہلا رئیل اسٹیٹ ڈویلپرہے جس نے وقت کی ضرورت کو سمجھا اور ماحولیات کے تحفظ کیلئے اہم اقدامات کئے۔ بحریہ ٹاؤن کراچی نے رینیوایبل توانائی کو اپنایا اور سولر پینلز کے ذریعے 3میگاواٹس بجلی کی پیداوار حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے۔بحریہ ٹاؤن کراچی نے نہ صرف اپنے دفاتر کی چھتوں کو استعمال میں لائے بلکہ اپنے رہائشیوں کو بھی اس بات کی ترغیب دی کہ وہ بھی سولر پاور کی اہمیت کو سمجھیں اور اسکے استعمال کی طرف آئیں۔ بحریہ ٹاؤن کراچی کی منجمنٹ اور الیکٹرکل ٹیم کی انھی کاوشوں کا نتیجہ ہے کہ صرف چھ ماہ کے قلیل عرصے میں بحریہ ٹاؤن کراچی نے بحریہ آپارٹمنٹس، بحریہ ٹاؤن انٹرنیشنل ہاسپٹل، مختلف شاپنگ گیلریز کی چھتوں پر سولر پینلز لگا کر جبکہ رہائشیوں نے اپنے گھر کی چھتوں کو استعمال کرکے بجلی پیدا کی اور ایک عظیم مثال قائم کی۔سولر پراجکٹ کی کامیابی کو دیکھتے ہوئے بحریہ ٹاؤن کراچی کی منجمنٹ نے سال کے آخر تک 10میگاواٹس بجلی سولر پینلز کے ذریعے بنانے کاہدف طے کیا ہے۔شمسی توانائی کے ساتھ ساتھ بحریہ ٹاؤن کراچی اپنے متعدد علاقوں میں شہری جنگلات کو پروان چڑھا رہا ہے تاکہ ماحول اور موسم پر اسکا مثبت اثر پڑے۔یہ بات قابلِ غور ہے کہ ان درختوں کی نشونما کے لئے استعمال ہونے والا پانی  صاف پینے کا پانی نہیں بلکہ یا تو وہ  سیوریج کا صاف کردہ پانی ہے یا پھر با رشوں کا جمع شدہ پانی ہوتا ہے اور پھر پودوں اور درختوں کو پانی بھی جدید ڈرپ اریگیشن سسٹم کے ذریعے دیا جاتا ہے تاکہ ان درختوں کو اتنا ہی پانی ملے جتنی انکی ضرورت ہے۔ اس کے علاوہ بحریہ ٹاؤن کراچی نے اپنے مختلف ڈپارٹمنٹس میں کاغذ کا استعمال ختم کر دیا ہے اور ٹیکنالوجی کا سہارالیتے ہوئے 200سے زائد سسٹم اور ایپلیکیشنز مرتب کی ہیں۔ ان تمام اقدامات سے ثابت ہوتا ہے کہ بحریہ ٹاؤن کراچی اہم ملکی وسائل کی حفاظت کی ذمہ داری میں پیش پیش ہے۔ بحریہ ٹاؤن کراچی نے نہ صرف ملکی وسائل کے بڑھتے ہوئے بحران کو سمجھا بلکہ پوری سنجیدگی کے ساتھ یہ اہم قدم اٹھایا اور تمام ملکی صنعتوں اور گھریلو صارفین کو بھی اس طرز پر سوچنے کی دعوت دی ہے۔

سولر انرجی

مزید :

صفحہ آخر -