ترقیاتی کام کرانے والوں کو ووٹ دیں گے: گلبہار کالونی کے مکین

ترقیاتی کام کرانے والوں کو ووٹ دیں گے: گلبہار کالونی کے مکین

لاہور (بابر بھٹی/الیکشن سیل) لاہور کینٹ کے علاقہ ٹوکہ والے سٹاپ گلبہار کالونی کے قریب گلی نمبر4 کے رہائشی افراد ٹوٹی پھوٹیسڑکوں اور پینے کا پانی نہ ملنے پر سراپا احتجاج بن گئے بتایا گیا ہے کہ گلی نمبر 4اور گلی نمبر 3کو لنک کرنے والی گلی کے رہائشی ظہیر احمد نے بتایا ہے کہ ہماری یہ گلی بالکل ٹھیک تھی اور اس کو پتہ نہیں کیوں اکھاڑا گیا ہے اور اس کو نامکمل ہی چھوڑ دیا جائے گا۔ اس سے ناصرف یہاں سے گزرنے والے افراد کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ بلکہ یہاں کے رہائشی بہت ہی پریشان ہیں کیونکہ اب ہمارے گھروں کے آگے سڑک کو اکھاڑنے کے بعد اس کو اسی طرح چھوڑ کر چلے گئے ہیں۔ ہماری گاڑیاں، موٹرسائیکل گھروں کے باہر ہی کھڑی رہتی ہیں جن کے چوری ہونے کا خدشہ لگارہتا ہے۔ محمد بوٹا نے بتایا ہے کہ ان کی عمر تقریباً 75سال کے قریب ہے اور یہاں پر پانی کا پائپ شاید 30سال قبل ڈالا گیا تھا اور آج پانی کا پائپ اپنی زندگی پوری کرچکا ہے اس میں پانی انتہائی گندہ زنگ آلودہ آرہا ہے۔ خالد محمود نے بتایا کہ سٹریٹ لائٹ نہ ہے اور اسی وجہ سے ڈکیتی کی وارداتین عام ہوگئیں ہیں۔ لوگ سرشام ہی گھروں میں گھس جاتے ہیں اور مہمانوں کو بھی سرشام ہی واپس بھیج دیا جاتا ہے۔ یہ علاقہ خواجہ سعد رفیق کا ہے اور ان سے پوچھ لیں کہ وہ اس علاقہ میں کتنی بار آئے ہیں اور یہاں پر ہمارے مسائل حل کروائے ہیں۔ اب ان لوگوں کا موسم آرہا ہے اب ان کو ہماری یاد ضرور آئے گی تو ہم بھی اب اس کو ہی ووٹ ڈالیں گے جو کہ ہمارے مسائل حل کرے گا۔ حاجی ذوالفقار نے بتایا ہے کہ یہاں گیس کا بہت مسئلہ ہے۔ ایک گلی میں اتنی گیس آتی ہے کہ پوچھے بھی نہ ہماری گلی میں سارا دن آج کل بھی صرف ایک 2 گھنٹے کیلئے آتی ہے۔ صفائی کا کوئی انتظام نہیں جب بھی صفائی والوں کا دل کیا صفائی کرگئے ورنہ کئی کئی دن صفائی نہیں ہوتی۔ عبدالرشید نے بتایا ہے کہ ہم نے تو اپنی قسمت اور اپنے مسائل سب کچھ خدا خدا پر چھوڑ دیا ہے۔ خدا ہمارے گناہوں کی سزا ان لیڈروں کی شکل میں دے رہا ہے جو کہ ہمارا خون چوس رہے ہیں۔ ان کو کائی خدا کا خوف بھی نہیں ہے۔ پر یہ لوگ کبھی کسی کی شادی کی خوشی میں اور نہ ہی کبھی کسی کے جنازے میں شرکت کیلئے آتے ہیں۔ شاید یہ لوگ مرنا بھی بھول گئے ہیں۔ شہباز نے بتایا ہے کہ ہم اپنے چھوٹے چھوٹے کام خود ہی کرسکتے ہیں جیسا کہ اب اس علاقہ میں سیوریج کا کام ہم نے خود ہی کروایا ہے۔ چھوٹے چھوٹے پائپ ڈال کر اپنا کام چلارہے ہیں مگر ہمارے حکمرانوں کو ہمارا کبھی بھی خیال نہیں آیا۔ رانا صفدر نے بتایا کہ جو بھی سیاست دان امیدوار ووٹ مانگنے آیا تو اس سے پہلے پچھلے 5 سالوں کا حساب لیا جائے گا۔ پھر ان سے اپنے مسائل کو حل کروایا جائے گا اور اس کے بعد ہی ووٹ ڈالنے کا وعدہ کیا جائے گا اور ہمارا وعدہ سیاسی وعدہ نہیں ہوگا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1