سعودی عرب اور جنوبی کوریا میں پرامن جوہری تعاون کا معاہدہ طے پا گیا

سعودی عرب اور جنوبی کوریا میں پرامن جوہری تعاون کا معاہدہ طے پا گیا

 ریاض(آن لائن)سعودی عرب کی حکومت اور جنوبی کوریا نے پرامن جوہری تعاون کے ایک مشترکہ معاہدے پر دستخط کردئیے ہیں۔ دونوں ملکوں کے درمیان جوہری تعاون سے متعلق معاہدہ سربراہ کانفرنس میں کیا گیا۔ تقریب میں سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور جنوبی کوریا کی خاتون صدر پارک کون ھی موجود تھیں۔سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’’واس‘‘ کے مطابق جنوبی کوریا اور سعودی عرب کے درمیان طے پائے پرامن جوہری تعاون کے معاہدے کی دستاویز پر شاہ عبداللہ جوہری توانائی سٹی کے چیئرمین ڈاکٹر ھاشم بن عبداللہ نے جبکہ دوسری جانب کورین وزیر سائنس و ٹیکنالوجی چوی یانگ ھی نے دستخط کیے۔ اس معاہدے کے تحت جنوبی کوریا سعودی عرب کو سائنسی تحقیقات میں معاونت فراہم کرنے کے ساتھ جوہری توانائی کے مختلف منصوبوں میں تعاون کرے گا۔دونوں ملکوں کے سربراہان کی ملاقات کے دوران بحری نقل و حمل کے ایک معاہدے کی بھی منظوری دی گئی۔ اس معاہدے پر سعودی عرب کے وزیر ٹرانسپورٹ انجینیئر عبداللہ بن عبدالرحمان المقبل جبکہ جنوبی کوریان کے وزیرخارجہ یون بیونگ سی نے دستخط کیے۔ اس معاہدے سے دونوں ملکوں کے درمیان دو طرفہ تجارت کے فروغ میں مدد ملے گی۔ باہمی تجارت کے فروغ کے لیے ایک دوسرے معاہدے کی بھی منظوری دی گئی جس پر شاہ عبدالعزیز سائنس ٹیکنالوجی سٹی کے چیئرمین ڈاکٹر ترکی بن سعود بن محمد اور جنوبی کوریا کے وزیر سائنس و ٹیکنالوجی نے دستخط کیے۔قبل ازیں جنوبی کوریا کی خاتون سربراہ نے ریاض کے شاہی محل میں شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے اپنی حکومت کے اعلیٰ اختیاراتی وفد کے ہمراہ ملاقات کی تھی۔ ملاقات میں تمام شعبوں میں دو طرفہ تعاون کیفروغ پر اتفاق کیا گیا تھا۔ جنوبی کوریا کی صدر کل بدھ ہی کو ایک روزہ سرکاری دورے پر ریاض پہنچی تھیں جہاں شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے خود شاہ خالد بین الاقوامی ہوائی اڈے پر ان کا استقبال کیا تھا۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ ولی عہد شہزادہ مقرن بن عبدالعزیز اور نائب ولی عہد شہزادہ نایف بن عبدالعزیز بھی موجود تھے۔

مزید : عالمی منظر