جموں کشمیر میں اسمبلی انتخابات کی کامیابی کا سہراریاستی عوام کے سرہے‘ مودی

جموں کشمیر میں اسمبلی انتخابات کی کامیابی کا سہراریاستی عوام کے سرہے‘ مودی

  

 نئی دہلی (کے پی آئی) بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے جموں کشمیر میں اسمبلی انتخابات کی کامیابی کا سہراریاستی عوام کے سر باندھتے ہوئے کہا ہے کہ ریاستی عوام نے بڑی تعداد میں ووٹ ڈال کر نہ صرف بین الاقوامی برادری کے اندر پائے جارہے تمام تر خدشات دور کردئے بلکہ جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے بھارتی دعوے پر مہر تصدیق ثبت کی پارلیمنٹ میں اظہار خیال کرتے ہوے مودی نے کہا کہ ریاست جموں وکشمیر میں پی ڈی پی اور بھاجپا کے درمیان حکومتی اتحاد کم از کم مشترکہ پروگرام کی بنیاد پر ہوا اور اسی پروگرام کی عمل آوری کے تحت دونوں حکومتی اکائیاں کام کریں گی ۔ انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر میں پی ڈی پی اور بھاجپا کی مخلوط حکومت صرف اور صرف کم از کم مشترکہ پروگرام پر انتظامی امور چلائے گی جس پر دونوں پارٹیوں کے درمیان معاہدہ ہوا ہے۔وزیر اعظم نے اپنی تقریر کے دوران اس حوالے سے بتایااگر کوئی اس طرح کا بیان دیتا ہے تو ہم کبھی بھی اسکی حمایت نہیں کرسکتے۔انہوں نے ممبران سے مخاطب ہوتے ہوئے کہااگر کہیں کوئی بیان دیتا ہے اور اس پر ہمیں یہاں جواب دینے پر مجبور کیا جاتا ہے تو بات نہیں بنے گی۔وزیر اعظم نے یہ بات زور دیکر کہی حکومت دہشت گردی کے تئیں زیرو ٹالرنس کی اپنی پالیسی پر کاربند رہے گی اورپارلیمنٹ میں منظور کی گئی تمام قراردادوں پر من و عن عملدرآمد کیا جائے گا۔اس موقعے پر بعض اپوزیشن ممبران نے جب وزیر اعظم سے یہ سوال کیا کہ کیا۔ بھارتیہ جنتا پارٹی جموں کشمیر میں پی ڈی پی اتحاد سے الگ ہوگی؟تو نریندر مودی نے دوٹوک الفاظ میں واضح کرتے ہوئے کہاکہ ریاست کی مخلوط سرکار کم سے کم مشترکہ پروگرام کی بنیاد پر چلائی جائے گی۔اس ضمن میں ان کا کہنا تھامیں ملک کے125کروڑ عوام اورایوان کو اس بات کا یقین دلانا چاہتا ہوں کہ جموں کشمیر کی حکومت کم سے کم مشترکہ پروگرام کے تحت قائم کی گئی ہے اور اسی بنیاد پر چلائی جائے گی۔ نریندر مودی نے دہشت گردی کے تئیں زیرو ٹالرنس پالیسی پر کاربند رہنے کا اعادہ کرتے ہوئے دوٹوک الفاظ میں واضح کیا کہ جموں کشمیر کی مخلوط سرکار کم سے کم مشترکہ پروگرام کی بنیاد پر چلائی جائے گی۔

مزید :

عالمی منظر -