ہسپتالوں میں امراض قلب کے فعال یونٹ بنانیکا فیصلہ

ہسپتالوں میں امراض قلب کے فعال یونٹ بنانیکا فیصلہ

 لاہور( جاوید اقبال) پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں دل کے مریضوں کا رش کم کرنے کے لئے محکمہ صحت نے ایکشن پلان تیار کر لیا ہے جس کے تحت شہر لاہور کے سرکاری ہسپتالوں میں امراض قلب کے فعال یونٹ بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے اس پلان کے تحت ہر سرکاری ہسپتال میں 40بیڈز پر مشتمل کارڈیالوجی وارڈز قائم کئے جائیں گے جنہیں مکمل سہولیات سے آراستہ کیا جائے گا ۔ٹیچنگ ہسپتالوں کے ان یونٹس میں انجیو گرافی ‘ انجیوپلاسٹی ‘ تھلیم ٹیسٹ ‘ ای سی جی ‘ ای ٹی ٹی اور دل کی سرجری کرنے کی تمام سہولیات اور ماہرین بھی موجود ہوں گے جس کی تصدیق مشیر صحت خواجہ سلمان رفیق نے کی ہے اور ان کا کہنا ہے کہ اس حوالے سے تمام ہسپتالوں کی انتظامیہ کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں کہ وہ فوری طور پر اپنے اپنے ہسپتال میں کارڈیالوجی کے لئے چالیس بیڈز مختص کریں اور اس سلسلے میں اپنی رپورٹس تیار کرکے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے چیف ایگزیکٹو اور ایم ایس کے پاس جمع کروائیں ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ان ہسپتالوں کے اس کارڈیک یونٹ میں پرائمری انجیو گرافی کرنے کی سہولت بھی چوبیس گھنٹے ایمرجنسی میں موجود ہوں گی اور یہ یونٹس قائم ہونے کے بعد یہ تمام ہسپتال کارڈیالوجی کے ایمرجنسی مریض ایمرجنسی میں لینے کے پابند ہوں گے اور کوئی ہسپتال ہارٹ اٹیک کا کوئی بھی مریض پی آئی سی یا پھر کسی اور ہسپتال میں ریفر نہیں کرے گا بلکہ اسے مریض کو اسی ہسپتال میں ایمرجنسی کی تمام سہولیات دینا ہوں گی ۔ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ جہاں پر یونٹ موجود نہیں ہیں وہاں قائم کئے جائیں گے۔اس حوالے سے مشیر صحت خواجہ سلمان رفیق کا کہنا ہے کہ ہم اس پلان پر آئندہ دو ماہ میں مکمل عمل کروائیں گے اس کا مقصد ہر علاقے میں دل کے مریضوں کو دل کے علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کرنا ہے اس پر عمل درآمد سے پی آئی سی میں مریضوں کا رش کم ہو جائے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1