زندگی بھر تنازعات میں گھرے رہنے والے شعیب اخترکے بارے میں وہ باتیں جوآپ کو معلوم نہیں

زندگی بھر تنازعات میں گھرے رہنے والے شعیب اخترکے بارے میں وہ باتیں جوآپ کو ...
زندگی بھر تنازعات میں گھرے رہنے والے شعیب اخترکے بارے میں وہ باتیں جوآپ کو معلوم نہیں

  

لاہور(نیوزڈیسک)آپ نے پاکستان کے معروف باﺅلر شعیب اختر کا تو سن رکھا ہوگا لیکن آج ہم آپ کو ان کی زندگی کے بارے میں دلچسپ باتیں بتاتے ہیں۔

*ان کا تعلق راولپنڈی سے ہے اس لئے انہیں ’راولپنڈی ایکسپریس‘ کہا جاتا ہے۔

*شعیب اختر کا خاندان کوئی  زیادہ امیر نہیں ہے اور وہ ایک غریب گھرانے سے تعلق رکھتے ہیں۔ان کے گھر کی چھت مستقل ٹپکتی رہتی تھی۔ان کے دادا نے ان کی والدہ کو غربت کی وجہ سے ایک انگریز جوڑے کو گود دے دیا تھا۔تاہم اپنی محنت سے شعیب نے اپنی دنیا بدل ڈالی .

*انہوں نے چند ماہ قبل ہری پور سے تعلق رکھنے والی 20سالہ دوشیزہ سے شادی کی ہے۔

*جب وہ پیدا ہوئے تو ان کا پاﺅں بالکل چپٹا تھااور تین سال کی عمر میں انہیں شدید کھانسی لگی ،ان کی بیماری شدید ہوگئی اور ان کی بیماری پر بہت پیسہ خرچ ہونے لگا۔ ان کے دادا نے ان کی والدہ کو مشورہ دیا کہ بچے کے علاج پر پیسہ خرچ کرنے کی بجائے ان پیسوں کو شعیب کے جنازے کے لئے سنبھال کر رکھ لے۔

*اپنے لڑکپن میں وہ بڑے بھائی شاہد کے شدید ڈانٹنے پر گھر سے بھاگ گئے تھے۔

*اپنے گھر کے پاس شعیب ایک پتھر کے پاس جاکر سوچتے رہتے تھے۔اس پتھر کو وہ’دوبارہ سوچنے کا پتھر‘ کا ناک دیتے ہیں۔وہ کہتے ہیں کہ برے دنوں میں وہ اس پتھر کے پاس بیٹھ کر گھنٹوں سوچا کرتے تھے اور یہ پتھر ان کا ’بہترین دوست‘ ہے۔اب بھی کبھی کبھار وہ اس پتھر کے پاس جاتے ہیں۔

* 1999کے مشہور زمانہ ’کلکتہ ٹیسٹ‘ میں انہوں نے ثقلین مشتاق کے ساتھ بھارتی کھلاڑی ٹنڈولکر کو آﺅٹ کرنے کی شرط لگاتے ہوئے واضح طور پر کہا کہ یہ میرا وقت ہے اور وہ میرا شکار ہے ۔

*باﺅلنگ ایکشن کی وجہ سے شعیب کو ویڈیو آبزرویشن میں باﺅلنگ کرنا پڑی لیکن اس کا نتیجہ بہت ہی حیران کن تھا اور انہیں کلیر کردیا گیا۔

*بال ٹمپرنگ کے حوالے سے وہ اپنی کتاب میں لکھتے ہیں کہ بال کو بنانے کے لئے اسے پچھلی زیپ اور جوتوں کے نیلز کے ساتھ بھی رگڑا جا سکتا ہے۔

*فلمسٹار میر ا نے ان سے 2005ءمیں مہیش بھٹ کی فلم ’گینگ سٹر‘ میں کام کرنے کا پوچھا تھا لیکن پاکستان کرکٹ بورڈ نے انہیں فلم میں کام کرنے کی اجازت نہ دی جس کی وجہ سے وہ فلموں میں کام نہ کرسکے۔

*یکم اپریل 2008ءمیں انہیں پاکستانی بورڈ نے اپنے اوپر تنقید کی وجہ سے پانچ سال کے لئے پابندی لگا دی لیکن اکتوبر 2008ءمیں لاہور ہائی کورٹ نے یہ پابندی ختم کردی اور وہ کینیڈا میں ہونے والے T20کے سکواڈ میں شامل ہوئے۔

*کولکتہ نائیٹ رائیڈرز کے لئے کھیلتے ہوئے انہوں نے کامیاب انڈین پریمئیر لیگ میں شاندار’کم بیک‘ کیا۔

*سری لنکا میں 2003ءمیں کھیلے جانے والے ٹورنامنٹ میں انہیں میچ کے دوران بال ٹمپرنگ کرتے ہوئے پکڑا گیا اور وہ دنیائے کرکٹ میں ایسے دوسرے کھلاڑی بن گئے۔

*آسٹریلیا کے ٹور 2005ءمیں انہیں انجری کی وجہ سے واپس بھیج دیا گیا لیکن ذرائع کا کہنا ہے کہ کرکٹ بورڈ نے انہیں ڈسیپلین کی خلاف ورزی پر واپس بھیجا۔

*وہ ان تین باﺅلرز میں سے ہیں جنہوں نے 100میل فی گھنٹہ سے زائد کی باﺅلنگ کی۔ورلڈ کپ 2003ءمیں انہوں نے انگلینڈ کے خلاف 100.2میل فی گھنٹہ کی رفتار سے گیند پھینکی۔

*شعیب اختر کا خیال ہے کہ ان کی آنکھیں بھارتی فلمسٹار سلمان خان کے ساتھ ملتی ہیں۔

*نومبر 2006ءمیں بھارتی ٹور کے دوران ایک انڈین ڈاکٹر نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے ٹیم کوچ باب ولمر کو تھپڑ مارا لیکن شعیب اور ولمر نے ان الزامات کی تردید کی۔

*فروری2006ءمیں انہیں ٹخنے اور کہنی کی سرجری کروانی پڑی لیکن انہیں ممنوعہ ادویات کے استعمال کی وجہ سے 2007ءمیں غیر معینہ مدت کے لئے بین کردیا گیا۔

*پاکستان کرکٹ بورڈ نے شعیب پر الزام لگایا کہ انہیں ایک جنسی مرض (genital warts) لاحق ہے جس پر انہوں نے اس کی تردید کی اور بورڈ پر ہرجانے کا دعویٰ کرنے کی دھمکی دی۔یہ الزام غلط ثابت ہوا لیکن انہوں نے بورڈ کے خلاف کوئی بھی کاروائی نہیں کی۔

مزید : کھیل