دو بچوں کی جان بچانے والے اس سیاہ فام کے ساتھ برطانوی حکومت کا ایسا سلوک کہ جان کر کسی کا بھی انسانیت سے اعتبار اٹھ جائے

دو بچوں کی جان بچانے والے اس سیاہ فام کے ساتھ برطانوی حکومت کا ایسا سلوک کہ ...

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک سیاہ فام شخص نے چند ہفتے قبل دو بچوں کی جانیں بچائیں لیکن اب برطانوی حکومت نے اس کے متعلق ایسا اعلان کر دیا ہے کہ سن کر آپ کو بھی دکھ ہو گا۔ دی گارڈین کی رپورٹ کے مطابق اس شخص کا نام رابرٹ گھیلووا ہے جو زمباوے نژاد ہے۔ چند ہفتے قبل اس کے ہمسائے میں آگ لگ گئی اور اس نے اپنی جان کو خطرے میں ڈالتے ہوئے گھر میں موجود دو بچوں کو باہر نکالا اور ان کی جان بچائی۔ اس دوران دھواں جسم میں چلے جانے کے باعث رابرٹ کی حالت غیر ہو گئی اور اسے ہسپتال میں داخل کرنا پڑگیا۔ پولیس اور ریسکیو اداروں نے رابرٹ کی اس جرأت مندی پر اس کی تعریف کی۔ لیکن اب برطانوی حکومت نے اسے ملک بدر کرنے کا اعلان کر دیا ہے کیونکہ محکمہ امیگریشن نے اس کی مزید قیام کی درخواست مسترد کر دی ہے۔

خاتون ڈرائیور بے ہوش، نوجوان کا ایسا کام کہ کئی بچوں کی جان بچالی

رپورٹ کے مطابق رابرٹ کا کہنا ہے کہ ”برطانوی حکومت کا یہ فیصلہ ایسے ہی ہے جیسے اس نے میرے منہ پر تھپڑ ماردیا ہو۔ میں نے اپنی جان پر کھیل کر بچوں کی جان بچائی اور اب حکومت جو مجھے کہہ رہی ہے وہ ایسے ہی ہے جیسے کہہ رہی ہو کہ ’دفع ہو جاﺅ۔‘اب میرے دوست مجھے مذاق سے کہتے ہیں کہ تم کب ملکہ سے ملاقات کرنے جا رہے ہو؟ کب تمہیں بہادری کا میڈل دیا جا رہا ہے؟“ رپورٹ کے مطابق واقعے کے روز شور سن کر رابرٹ ننگے پاﺅں بھاگ کر باہر نکلا۔ گھر کی پہلی منزل سے کود کر نیچے آنے والی نسبتاً بڑی لڑکی نے اسے بتایا کہ اس کے دو چھوٹے بہن بھائی اندر موجود ہیں۔ اس نے دو بچوں کو بچا لیا تاہم اس واقعے میں تین افراد کی موت واقع ہو گئی تھی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...