پاکستان میں خواتین کے حقوق میں کوئی بہتری نہیں آئی: برطانیہ

پاکستان میں خواتین کے حقوق میں کوئی بہتری نہیں آئی: برطانیہ

لندن(این این آئی)برطانوی وزارتِ خارجہ نے کہاہے کہ پاکستان میں خواتین کے حقوق میں کوئی بہتری نہیں آئی،گذشتہ برس بھی پاکستان میں ’غیرت‘ کے نام پر عورتوں کے قتل اور ان پر تشدد کے واقعات میں تسلسل دیکھنے میں آیا ۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق برطانوی وزارت خارجہ سے جاری رپورٹ میں کہا گیا کہ 2016 میں بھی پاکستانی خواتین کو تشدد سمیت مختلف سنگین مسائل کا سامنا رہا اور عورتوں کے حقوق کے حوالے سے خاطر خواہ بہتری نہیں آئی۔رپورٹ کے مطابق عورتوں کے خلاف تشدد کے اکثر واقعات میں خاندان کے افراد ہی ملوث پائے گئے ہیں۔ رپورٹ میں معروف سوشل میڈیا سٹار قندیل بلوچ کے اپنے بھائی کے ہاتھوں قتل ہونے کا ذکر بھی شامل ہے۔برطانوی وزارتِ خارجہ کی جانب سے جاری کی گئی اس رپورٹ میں کہا گیا کہ پاکستان میں عورتوں کی مختلف شعبہ زندگی خصوصاً عدلیہ اور حکومتی محکموں میں نمائندگی کا تناسب بھی کم ہے۔برطانوی وزارتِ خارجہ کی جانب سے جاری کی گئی اس رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ حکومت میں عورتوں کی نمائندگی کا تناسب بہت کم ہے۔برطانوی وزارتِ خارجہ کی رپورٹ پر جہاں پاکستان میں عورتوں کے حقوق کے حوالے سے تشویش کے اظہار کیا گیا ہے، وہاں ’غیرت کے نام پر قتل‘ اور ’ہندو میرج بل‘ جیسے قوانین کے پاس ہونے کو خوش آئند قرار دیا گیا ہے۔

مزید : عالمی منظر