بلدیہ کمیٹی مظفر گڑھ کا ششماہی بجٹ شور شرابے میں منظور ‘ اپوزیشن کا بائیکاٹ

بلدیہ کمیٹی مظفر گڑھ کا ششماہی بجٹ شور شرابے میں منظور ‘ اپوزیشن کا بائیکاٹ

مظفرگڑھ (نامہ نگار+نما ئندہ پاکستان ) بلدیہ کمیٹی مظفرگڑھ کے اجلاس میں ہنگامہ آرائی اور شورشرابہ کے بعدششماہی بجٹ7 201 اکثریت رائے سے منظورکرلیا گیا۔ چیف افیسر (بقیہ نمبر23صفحہ7پر )

اور اپوزیشن کونسلر عارف قریشی کے درمیان تلخ کلامی تفصیلات کے مطابق میونسپل کمیٹی مظفرگڑھ کا ششماہی بجٹ اجلاس2017 ء میونسپل کمیٹی ہال میں منعقد ہوا۔ اجلاس کی صدارت وائس چیئرمین بابر اسلم شیخ نے کی اورششماہی بجٹ 2017ء چیئرمین میونسپل کمیٹی مظفرگڑھ سردار اکرم خان چانڈیہ نے پیش کیا۔رواں سال بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں عائد کیا گیااور نہ ہی موجودہ شرح میں کوئی اضافہ کیا گیا ہے۔کل اخراجات کا تخمینہ کل متوقع آمدنی سے کم رکھا گیا ہے۔بجٹ میں کل متوقع آمدنی10کروڑ 98 لاکھ لگائی ہے۔تنخواہ عملہ کی مد4 کروڑ 79 لاکھ68 ہزار روپے رکھے گئے ہیں۔جبکہ سائر اخراجات اور متفرق اخراجات کا تخمینہ 1 کروڑ96 لاکھ 5سور وپے رکھا گیا ہے۔مرمتیں اور دیکھ بھال کیلئے 1 کروڑ روپے رکھے گئے ہیں۔سی سی بی کے لئے بھی ایک لاکھ روپے رکھے گئے ہیں۔دیگر ترقیاتی اخراجات کیلئے 60 لاکھ روپے رکھے گئے ہیں۔موجودہ وسائل میں کمی کے باوجود پنشنرز کیلئے پنشن فنڈ میں خطیر رقم مختص کی گئی ہے۔ اس بجٹ کے حق میں 29ووٹ جبکہ مخالفت میں 22 ووٹ پڑے اس طرح بجٹ میونسپل کمیٹی کثر ت رائے سے منظور کر لیا گیا بجٹ کے اجلاس کے اختتام پر چیئرمین سردار اکرم چانڈیہ اور وائس چیئرمین بابر اسلم شیخ نے ہاؤس کا شکریہ ادا کیا۔دریں اثناء بجٹ اجلاس شروع ہوا تو اپوزیشن لیڈر قدوس نواز خان کے کونسلرعارف قریشی کی چیف آفیسر میونسپل کمیٹی مظفرگڑھ قاضی مسعود الرؤف سے حاضری کے معاملے پر جھگڑا ہوااور کافی تو تکرارہوئی جس کے باعث بجٹ اجلاس مچھلی بازار کا منظر پیش کرنے لگااس موقع پر خطاب کرتے ہوئے خان قدوس نواز خان کا کہنا تھا کہ وُہ شہر کی تعمیر وترقی کے لیے چیئرمین میونسپل کمیٹی کا ساتھ دینگے مگر ناانصافی یہ ہے کہ شہرکے ترقیاتی فنڈز کے لیے صرف70لاکھ روپے کا فنڈرکھا گیا جبکہ باقی کروڑوں روپے کے فنڈز سے تنخواہوں میں بندربانٹ کردی گئی۔قسوس نواز کا مزید کہنا تھا کہ میونسپل کمیٹی ک335خاکروب ظاہر کیے گئے ہیں مگر حقیقت تو یہ ہے کہ شہر میں صفائی کے لیے خاکروب ہی نظر نہیں آتے اور سفید پوش خاکروب بھرتی کرکے ان کی تنخواہیں خرد برد کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔بعدازاں ممبران اپوزیشن نے یہ بھی اعتراض اٹھایا کہ قواعد کیمطابق کونسلرزکو مجوزہ بجٹ کی کاپی2دن پہلے مہیا کی جانی چاہیے تھی مگر انھیں اجلاس کے دوران ہی بجٹ کاپی مہیاکی گئی جس کے باعث وُہ بجٹ اجلاس کا بائیکاٹ کرتے ہیں۔اس کے بعد اپوزیشن لیڈر قدوس خان نے اور ان کے کونسلرزنے بجٹ کی کاپیاں پھاڑ کر اجلاس کا بائیکاٹ کردیا۔دوسری جانب چیئرمین میونسپل کمیٹی مظفرگڑھ اکرم خان چانڈیہ کا کہنا تھا کہ بجٹ اجلاس میں انھیں اکثریت حاصل تھی اور انکے انتیس کونسلرز بجٹ اجلاس میں موجود تھے،ان کا مزیدکہنا تھا کہ وُہ شہر کو ترقی یافتہ بنانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے۔.

مزید : ملتان صفحہ آخر