رحیمیار خان ‘ ذبح کی جانیوالی خاتون کا قاتل مبینہ پہلا آشنا نکلا

رحیمیار خان ‘ ذبح کی جانیوالی خاتون کا قاتل مبینہ پہلا آشنا نکلا

رحیم یارخان(ڈسٹرکٹ رپورٹر) مبینہ عاشق کے خاتون کو چھریوں کے وارسے قتل کرنے کی کہانی کھل گئی، گزشتہ سے پیوستہ روز موضع تھلواڑی کی بستی ہاشم سے خاتون منزہ بی بی کی نعش برآمد (بقیہ نمبر16صفحہ12پر )

ہوئی تھی جس کی گردن پر تیز دھار آلہ سے گہرے زخم ڈال کر قتل کیا گیا تھا ،پولیس نے مقتولہ منزہ بی بی کے بھائی محمد خالد کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا جس میں موقف اختیار کیاگیا کہ وہ صدیق اکبر کالونی خان پور کار ہائشی ہے اور موبائلوں کا کاروبارکرتاہے اس کی ہمشیرہ منزہ بی بی کی شادی 10سال قبل ایاز احمد سے ہوئی تھی جوکہ اپنے شوہر کے ہمراہ مجید کالونی میں رہائش پذیر تھی ہم اپنی ہمشیرہ کے گھر موجود تھے کہ اسی دوران ملزم عبدالواحد عرف بدھو اپنی ہمشیرہ رخسانہ کے ہمراہ بہنوئی کے گھر آیا اور اپنی بہن کی طبیعت خراب ہونے کا بہانہ بناکر اس کی ہمشیرہ منزہ کو ہمسایہ ہونے کے ناطے ہمراہ لے گیا بعدازاں اس کی ہمشیرہ کی نعش بستی ہاشم موضع تھلواڑی کے گھر سے برآمد ہوئی جبکہ ذ رائع نے بتایا کہ مقتولہ منزہ نے ملزم عبدالواحد جوکہ ہمسایہ تھا سے مبینہ تعلقات استوار کررکھے تھے عبدالواحد کو شبہ تھا کہ منزہ نے اسے چھوڑکر کسی اور سے بھی تعلقات استوار کررکھے ہیں جس کی رنجش پر وہ منزہ کو سیر کروانے کے بہانے ہمراہ لایا اور ساتھی ملزم ممتاز احمد کی مدد سے اس کے گھر میں تیز دھار آلہ سے شہ رگ کاٹ کر ہمشیرہ منزہ کو موت کے گھاٹ اتاردیا اور خود آلہ قتل سمیت موقع سے فرارہونے میں کامیاب ہوگئے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر