خورد بردگئی رقوم کی کھاتہ اداروں کے ذمہ دار متعلقہ بینک ہونگے ،صدارتی حکم

خورد بردگئی رقوم کی کھاتہ اداروں کے ذمہ دار متعلقہ بینک ہونگے ،صدارتی حکم

 لاہور(سعید چودھری )صدر نے حکم جاری کیا ہے کہ بنک افسر وں کی طرف سے فراڈ کے ذریعے خورد برد کی گئی رقوم کی کھاتہ داروں کو ادائیگی کے ذمہ دار متعلقہ بنک ہوں گے ،اس فراڈ کو دو افراد کے درمیان لین دین یا ذاتی معاملہ قرار دے کر بنک اپنی ذمہ داریوں سے چشم پوشی نہیں کرسکتے ۔صدر ممنون حسین نے یہ حکم بنکنگ محتسب کے فیصلوں کے خلاف سینکڑوں اپیلوں کو نمٹاتے ہوئے بطور اپیلٹ اتھارٹی جاری کیا ہے ۔اپیلٹ اتھارٹی کے طور پر صدر نے قرار دیا ہے کہ بینک کھاتہ داروں کی رقوم کے امین ہیں اور ان کے ملازمین اگر کھاتہ داروں سے فراڈ کرتے ہیں تو اس کے ذمہ دار بھی متعلقہ بنک ہیں ۔ایوان صدر نے اس ضمن میں سرگودھا کے ڈاکٹر یاسر سمیت 200سے زائدشہریوں کی اپیلوں پر متعلقہ بنکوں کو کھاتہ داروں کے خوردبرد کئے گئے کروڑوں روپے واپس کرنے کا حکم دیا ہے ۔زیرنظر مقدمات میں ایسے معاملات کی بھرمار تھی کہ شہریوں نے بنکوں کے ساتھ منافع کے قلیل المدتی معاہدات کئے ،بنک افسروں کی طرف سے انہیں ٹی ڈی آر (Time Deposite Receipt)کی بجائے ان کی نقول فراہم کردی گئیں۔بعدازاں پوری رقم اس کے کھاتہ میں جمع کرانے کی بجائے کسی اور کھاتہ میں منتقل کردی گئی ،ایک مقدمہ میں ایک خاتون کو کئی سال تک رقم وصولی کی رسیدیں دی جاتی رہیں لیکن اس کے کھاتہ میں رقم جمع نہیں کی گئی ۔بینکوں کی طرف سے ایسے فراڈز کا ذمہ دار متعلقہ افسروں کو قرار دیا گیا جبکہ افسروں اور متاثرہ کھاتہ داروں کے درمیان ایسے معاہدے بھی تیار کرلئے گئے جن سے یہ معلوم ہوتا تھا کہ دونوں کے درمیان یہ ذاتی لین دین کا معاملہ ہے ،بنک اس میں ملوث نہیں ،اب صدر مملکت نے حکم جاری کیا ہے کہ ایسے جو بھی فراڈ ہوں گے ان میں خورد برد کی گئی رقم کی ادائیگی کے ذمہ دار متعلقہ بینک ہوں گے کیوں کہ فراڈ کرنے والے لوگ ان کے ملازمین ہیں اور وہ بینک کا نام استعمال کرکے ہی لوگوں کی رقوم کو خوردبرد کرتے ہیں ۔کسٹوڈین کی حیثیت سے بینکوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے کھاتہ داروں کے مفادات اور رقوم کا تحفظ کریں۔

صدر۔ بنک

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...