تخت بائی ،ایسٹرن بائی پاس کے متاثرین کا عدم ادائیگی کیخلاف احتجاج

تخت بائی ،ایسٹرن بائی پاس کے متاثرین کا عدم ادائیگی کیخلاف احتجاج

تخت بھائی (نامہ نگار)تخت بھائی ایسٹرن بائی پاس کے متاثرین نے معاوضے کی عدم ادائیگی اور تاخیر کے خلاف شدید احتجا ج کر تے ہوئے منصوبے پر جاری کام زبردستی بند کر ا دیا تاہم اے ایس پی سرکل اور ایس ایچ او تھانہ ساڑو شاہ کی یقین دھانی پر متاثرین نے منصوبے پر کام جاری رکھنے کی اجازت دے دی اور دھمکی دی کہ اگر انہیں پیر کے دین تک معاوضے کی ادائیگی یقینی نہ بنائی گئی تو منصوبے پر دوبارہ زبر دستی کام بند کر ادینگے ۔ تفصیلات کے مطابق نئی تعمیر ہونے والی تخت بھائی ایسٹرن بائی پاس پر شاہ نورپل سے حیدر خان کلے تہ روڈ کی تعمیر کی زد میں درجنوں قیمتی مکانات ، مساجد اور سکول وغیرہ کو مسمار کر دیا گیا تھا اور چیئر مین ڈیڈک ایم اپی اے افتخار علی مشوانی نے اپنے ہاتھوں سے متاثرین میں معاوضے کے چیکس تقسیم کئے تھے تاہم مقررہ تاریخ گزرنے کے باوجود متاثرین کی دیئے گئے چیکس بنک اکاؤنٹ میں رقم نہ ہونے کے باعث کیش نہیں ہوسکے جس کے خلاف متاثرین نے یوسی ساڑو شاہ سے پی ٹی آئی کے ممبرڈسٹرکٹ کونسل شاہد سراج اور متاثرین ایکشن کمیٹی کے چیئرمین واجد خان اور جنرل سیکرٹری یونس خان کی قیادت میں شدید احتجاج کر تے ہوئے ایسٹرن بائی پاس نرئی ولہ فاروق آباد کے قریب احتجاجاً جاری کام بند کرادیا تاہم اے ایس پی تخت بھائی سرکل علی بن طارق اور ایس ایچ او تھانہ ساڑو شاہ بشیر خان نے متاثرین کے ساتھ مذاکرات کرکے انہیں جلد از جلد معاوضے کی ادائیگی یقینی بنانے یقین دھانی کرائی جسکے بعد متاثرین نے ایسٹرن بائی پاس منصوبے پر کام جاری رکھنے کی اجازت دے دی بعد ازاں میڈیا کلب تخت بھائی میں درجنوں متاثرین کے ہمراہ نیوز کانفرنس میں اظہارخیال کر تے ہوئے یوسی ساڑو شاہ سے پی ٹی آئی کے ممبر ڈسٹرکٹ کونسل شاہد سراج ، ایکشن کمیٹی کے چیئرمین واجد خان،جنرل سیکرٹری یونس خان ، سہراب ، محمد اسحاق ، محمد علی شاہ ، جاوید خان ، عمران ، نادر ، پیر محمد ، عبدالمتین ، عزیر الر حمن ،خانزادہ ، مراد، فضل رازق محمد یونس ، لقمان اور واجد وغیرہ مثاترین کے ہمراہظہار خیال کر تے ہوئے کہا کہ متاثرین کو معاوضے کی ادائیگی میں تاخیرحربوں پر شدید افسوس کی اور غم غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایسٹرن بائی پاس منصوبے کیلئے اہل علاقہ نے اپنے قیمتی مکانات ، زرعی اراضیات ،مساجد اور سکولوں کو مسمار کرنے کی قربانی دیں تھی ۔ اب ہم کو ذلیل اور خوار کرنے کی کوشش ہورہی ہے۔ چیئرمین ڈیڈک ایم پی اے افتخار علی مشوانی نے متاثرین کو اپنے ہاتھوں سے 23فروری کے جو چیکس دیئے تھے وہ تاحال کیش نہیں ہوسکے اور متاثرین ابھی تک معاوضے کے حق سے محروم ہیں۔ انہوں نے خیبر پختونخوا کے صوبائی وزیر اعلیٰ پرویز خٹک سے فوری طورپر متاثرین کو معاوضے کی ادائیگی یقینی بنانے کا مطالبہ کرتے ہوئے دھمکی دی کہ اگر 72گھنٹوں کے اندر اندر ہمیں معاوضہ نہ ملا تو ہم پیرکے روزسے منصوبے پر جاری کام بند کرنے کے ساتھ ساتھ تخت بھائی چارسدہ روڈ کو ہر قسم کی ٹریفک کیلئے بند کرادینگے ۔ جسکی تمام تر ذمہ داری مقامی ایم پی اے اور ضلعی انتظامیہ پر ہوگی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...