حکومت وہی کرنے جارہی ہے جو نواز شریف کرنا چاہتے تھے ، سینیٹر مصدق ملک کا دعویٰ

حکومت وہی کرنے جارہی ہے جو نواز شریف کرنا چاہتے تھے ، سینیٹر مصدق ملک کا دعویٰ
حکومت وہی کرنے جارہی ہے جو نواز شریف کرنا چاہتے تھے ، سینیٹر مصدق ملک کا دعویٰ

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ن کے سینیٹر مصدق ملک نے کہاہے کہ یہی نواز شریف کا مقدمہ تھا اور اب بھی یہی بات کی جارہی ہے ، حکومت شدت پسند تنظیموں کے اثاثہ جات قبضے میں لینے کے بعد اب ان کی مانیٹرنگ بھی کرے گی ۔

جیونیوز کے پروگرام ”آپس کی بات“ میں گفتگو کرتے ہوئے مصدق ملک نے کہا کہ نواز شریف دو ہی باتیں کرتے تھے کہ ہم کو اپنے ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات بہتر کرنے چاہئے اور شدت پسندتنظیموں کو قومی دھارے میں لاناچاہئے ، یہی نواز شریف کا مقدمہ تھا اور اب بھی یہی بات کی جارہی ہے ، حکومت شدت پسند تنظیموں کے اثاثہ جات قبضے میں لینے کے بعد اب ان کی مانیٹرنگ بھی کرے گی ۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے دور میں سوات کا آپریشن ہوا ، پاکستان کی تاریخ میں اتنا بڑا آپریشن نہیں ہوا ، اس کا سہرا پیپلز پارٹی کے سرجاتاہے ، مسلم لیگ ن کے دور میں شمالی وزیر ستان میں آپریشن ہوا ، کالعدم تنظیموں کے سکولز حکومتی عملداری میں لائے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ جس دن ساری اپوزیشن اکٹھی ہوئی ، اس دن وزیر اعظم نہیں آئے اور تمام سوالات کا جواب آرمی چیف نے دیا اور لیڈر شپ دکھائی ، اچھا ہوتا کہ اگر وزیر اعظم خود اپوزیشن کے سوالوں کا جواب دیتے اور سوالات کا جواب دیتے ۔ ان کا کہنا تھا کہ اس وقت ایک نازک مرحلہ ہے ، اس وقت وزیر اعظم کودل بڑا کرنا چاہئے اور اپوزیشن کو اعتماد میں لیکر چلناچاہئے ، وہ آگے بڑھ کر اپوزیشن سے ہاتھ ملائیں ، اس سے وقار بڑھے گا اور وزیر اعظم کو پارلیمان سے طاقت ملے گی ۔

مزید : قومی