اسلامیہ کالج میں 30 سال بعد زوالوجیکل کانفرنس کا انعقاد

اسلامیہ کالج میں 30 سال بعد زوالوجیکل کانفرنس کا انعقاد

  



پشاور( سٹی رپورٹر)اسلامیہ کالج پشاور میں تیس سال بعد39ویں زووالوجیکل کانگریس شروع ہوگئی۔تین روز تک منعقدہ کانگریس میں پانچ سو سے زائد محققین اپنے مقالے پیش کریں گے۔یہ کانگریس ہر سال ملک کے مختلف شہروں کی جامعات میں منعقد ہوتی ہے۔ یہ کانگریس 30سال بعد خیبر پختونخوا میں منعقد ہورہی ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر عبدالرف شکوری صدر زووالوجیکل سوسائیٹی آف پاکستان نے کانگریس کا افتتاح کیا جبکہ پروفیسر ڈاکٹر حید ر شاہ جدون سابق وائس چانسلر اسلامیہ کالج اعزازی مہمان تھے۔وائس چانسلر اسلامیہ کالج پروفیسر ڈاکٹر حبیب احمدنے افتتاحی تقریب کی صدارت کی اور شرکا کو خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ اسلامیہ کالج کے لئے بہت اعزاز کی بات ہے کہ یہ انتالیسویں زووالوجیکل کانگریس اسلامیہ کالج میں پہلی ہار منعقد ہورہی ہے ۔انھوں نے ارگنائیزنگ کمیٹی کی کاوشوں کو سراہا۔افتتاحی تقریب میں ممتاز محققین کو گولڈ میڈلز ، تعریفی اسناد اور شیلڈز دیئے گئے۔ افتتاحی تقریب میں اسلامیہ کالج کے سابق وائس چانسلر اجمل خان، فاٹا یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر طاہر شاہ اور بنو یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر عابد علی شاہ نے بھی شرکت کی۔اس تقریب کے مہمان خصوصی پروفیسر ڈاکٹر عبدالرف شکوری نے کانگریس کی میزبانی پر اسلامیہ کالج کے وائس چانسلر اور شعب زووالجی کے چئیرمین کا شکریہ ادا کیا کہ تین دہائیوں کے بعد اسلامیہ نے قومی زووالوجیکل کانگریس کا انعقاد کیا ہے جو پورے صوبے کے لئے اعزاز کی بات ہے۔ کانگریس میں پورے ملک سے 500 سے زائد مندوبین شرکت کر رہے ہیں۔ جن کا تعلق ملک کی 30 سے زائد جامعات سے ہے۔ کانگریس کی ارگنائیزنگ کمیٹی کے سرپرست اعلی پروفیسر ڈاکٹر حبیب احمد وائس چانسلر اسلامیہ کالج جبکہ کنوینئر پروفیسر ڈاکٹر علی محمد شعب زووالوجی ہیں۔ ارگنائیزنگ کمیٹی میں ڈاکٹر گل نبی خان،ڈاکٹر رحمان خٹک،ڈاکٹر قاسم منصور،ڈاکٹر محمد فہیم ،ڈاکٹر نوید عباس،ڈاکٹر محمد الیاس،سکندر سردار،امتیاز احمد، فخر عالم، ضیا الدین ،علی ہوتی اور محمد عدنان شامل ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...