مہمند ،بٹ خیلہ میں پاک فوج سے اظہار یکجہتی کیلئے ریلی کا انعقاد

مہمند ،بٹ خیلہ میں پاک فوج سے اظہار یکجہتی کیلئے ریلی کا انعقاد

  



مہمند ،بٹ خیلہ ( نمائندہ پاکستان،بیورورپورٹ)مہمند ، کمالی حلیمزئی غازی بیگ میں حالیہ ہندوستانی جارحیت کے خلاف ریلی و اجتماع ۔ بھارتی حکومت کی جارحیت، کشمیری عوام پر ہندوستان کے مظالم اور پاکستان کی سالمیت کو نقصان دینا برداشت نہیں کرینگے۔ بھارتی جارحیت کے خلاف پہلے بھی قبائلی عوام نے جانی قربانیاں دی ہیں اور آئندہ بھی سینہ تان کر کھڑے ہیں۔ ماضی میں کشمیر میں قبائلی عوام کی قربانیاں کسی سے پوشیدہ نہیں ہے۔ ہم جنگ نہیں چاہتے اور اگر ہندوستان نے جنگ مسلط کی تو تمام قبائل فوج کے شانہ بشانہ لڑیں گے۔ تفصیلات کے مطابق قبائلی ضلع مہمند تحصیل حلیمزئی غازی بیگ میں تمام سیاسی و فلاحی رہنماؤں ، مشران اور عوام نے حالیہ ہندوستانی جارحیت کے خلاف اور پاک آرمی سے اظہار یکجہتی اور مقبوضہ کشمیر کے عوام پر ہندوستانی مظالم کے خلاف مہمند ماڈل سکول سے غازی بیگ بازار تک ریلی نکالی اور ایک اجتماع کا اہتمام کیا گیا۔ ریلی میں پاک آرمی زندہ باد اور پاکستان پائندہ باد کے نعرے لگائے گئے۔ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے ملک جہانزیب، ملک سلیم سردار، ملک غلام نبی، ملک صاحب داد، ملک عباس رحمن، امیر اللہ جنیدی، جے آئی کے امیر محمد سعید خان، میر افضل، ملک دریا خان اور پی پی پی کے رہنماء امتیاز خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ہم سب کا گھر ہے اوران کی دفاع ہم سب کی مشترکہ ذمہ داری ہے۔ اس وقت ہمیں متحد رہنے کی ضرورت ہے۔ قبائلی عوام نے ماضی میں بھی پاکستان کیلئے مالی و جانی قربانی دی ہے اور آئندہ بھی کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے۔مشرقی بارڈر آفغانستان کے تمام قبائل حکومت کے بغیر تنخواہ کے سپاہی ہیں۔ کشمیر میں قبائلی عوام کی قربانی پاکستان کے بچے بچے کو یاد ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم جنگ نہیں چاہتے اور اگر ہندوستان نے ہم پر جنگ مسلط کی تو تمام قبائل فوج کے شانہ بشانہ لڑینگے۔

اتمان خیل تحصیل پڑانگ غر نے بھی پاک فوج کے ساتھ مکمل یکجہتی اور وطن عزیز کی دفاع کیلئے شانہ بشانہ لڑنے کے عزم کااعلان کیا۔ دشمن کی میلی آنکھ کو پھوڑنے کی طاقت رکھتے ہیں ، امن کی خواہش کمزوری نہیں ہم اینٹ کاجواب پتھر سے دے سکتے ہیں۔ ان خیالات کااظہار ملک نورزاد خان اتما ن خیل تحصیل پڑانگ غر اوران کے ساتھ دیگر ساتھیوں نے یہاں اخباری نمائندوں کو جاری کشیدہ حالات کی تناظر میں اپنے احساسات اور جذبات کے اظہار کیلئے اخباری بیان دیتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ سب سے پہلے دونوں ملکوں کے عوام کو امن کی ضرورت ہے تاہم اگر انڈیا لڑنا چاہتاہے اور ہمارے ملک کی طرف میلی آنکھ سے دیکھنے کی کوشش کرتاہے تو ان کی آنکھیں پھوڑنے کیلئے ہم قبائیل تیار ہیں حکومت جب چاہے اور جس وقت ہمیں پکاریں گے ہم مملکت خداد پاکستان کے چھپے چھپے کی حفاظت کیلئے مر مٹنے کیلئے تیار ہیں۔ہم پاک فوج کی شانہ بشانہ ہونگے ۔ قبائیل وہی نڈر اور باغیرت قوم ہے جو سالہا سال سے بغیر خرچ و تنخواہ کے اپنی ملک کے سرحدوں کی حفاظت پر معمور ہیں ۔ یہ ہمارے اسلاف کی روایت ہے اور ہم ان کو زندہ رکھتے ہوئے جب بھی ایسا موقع آئے گا تو ہم اپنی جانوں کو نچھاور کرنے سے دریغ نہیں کریں گے۔ اقلیتی برادری درگئی نے پاک فوج کی حمایت اور پاکستان سے اظہار محبت کیلئے ایک ریلی کاانعقاد کیا جس کی قیادت اقلیتی برادری کے صدر ربوجاوید اور راشد مسیح نے کی ۔ انہو ں نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھائے ہوئے تھے جس پر پاکستان زندہ آباد، پاک فوج زندہ آباد ، ہم تمام اقوام آپ کے ساتھ ہیں، جیسے نعرے درج تھے۔ اقلیتی برادری نے پاکستان کا جھنڈا تھامے پورے درگئی بازار میں چکرلگایااور بعدازاں مین چوک درگئی بازار میں اکھٹے ہوکر پاک فوج کے ساتھ یکجہتی کااظہار کیا۔ انہوں نے کہاکہ ہم اس ملک کے بسنے والے ہیں یہ ہمارا ملک میں جہاں ہمیں امن اور تحفظ حاصل ہیں،روزگارحاصل ہیں، ہمارے بڑے اور بچے اس دیس کے باسی ہیں۔ ہم اپنی جان و مال سب کچھ اس ملک پر لٹانے کو تیار ہیں ہم پاک فوج کے ساتھ ہیں ان کے شانہ بشانہ ہے جب بھی ضرورت ہوگی ہم حاضر ہونگے۔ انہوں نے پاک فوج زندہ آباد ، پاکستان زندہ آباد کے نعرے بھی لگائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...