میگا کرپشن سکینڈلز پر ملبہ ڈالنے کیلئے ڈی جی نیب کو راستے سے ہٹا دیا گیا،ایمل ولی

میگا کرپشن سکینڈلز پر ملبہ ڈالنے کیلئے ڈی جی نیب کو راستے سے ہٹا دیا گیا،ایمل ...

  



پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان نے بی آر ٹی پشاور کے بیشتر سٹیشنز کی از سر نو کھدائی اور ڈیزائن میں تبدیلیوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریکارڈ پر موجود ہے اے این پی نے روز اول سے آگاہ کر دیا تھا کہ یہ منصوبہ اس حکومت کے بس کا روگ نہیں ،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ بی آرٹی صرف کرپشن اور کمیشن کیلئے سابق صوبائی حکومت نے شروع کیا اور اب پراجیکٹ ڈائریکٹر کمیشن و کرپشن کو بی آر ٹی کے ملبے تلے دفن کرنے کی غرض سے افتتاح کی تاریخیں دیئے جا رہے ہیں لیکن قومی خزانہ مال مفت کی طرح لوٹنے والے یاد رکھیں کہ میٹرو عوام کے ذہن پر نقش ہو چکا ہے اور اس میں کئے گئے گھپلے کسی طور چھپائے نہیں جا سکتے ۔انہوں نے کہا کہ منصوبے کے حوالے سے گزشتہ روز ہونے والے اجلاس میں پراجیکٹ ڈائریکٹر نے وزیر اعلیٰ کو بھی ماموں بنا دیا جس پر وزیر اعلیٰ سیخ پا ہوگئے تھے،انہوں نے کہا کہ بد قسمتی سے نیب کٹھ پتلی ادارہ بن چکا ہے اگر صحیح معنوں میں تحقیقات کرائی جائیں تو سابق و موجودہ وزیر اعلیٰ کا بوریا بستر گول ہو سکتا ہے،ایمل ولی خان نے کہا کہ 40ارب سے شروع ہونے والے اس سفید ہاتھی کی لاگت 100ارب سے تجاوز کر چکی ہے لیکن مکمل ہونے کا نام نہیں لے رہا جس کی بنیادی وجہ اس میں کی گئی کرپشن ہے،انہوں نے کہا کہ احتسابی ادارے تحقیقات کو منطقی انجام تک پہنچائیں اور اربوں روپے کمیشن کھانے والوں کو عوام کے سامنے بے نقاب کیا جائے ، انہوں نے مزید کہا کہ خیبر پختونخوا میں پی ٹی آئی نے جو کرپشن کی اس کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی، پی ٹی آئی صوبے کی سیاست میں بدقسمت اضافہ اور سیاسی اقدار پر بد نما داغ بن چکی ہے ، انہوں نے واضح کیا کہ تحریک انصاف کی کرپشن پر مکمل خاموشی اختیار کرنے کیلئے ڈی جی نیب کو بھی تبدیل کر کے پیغام دیا گیا کہ خیبر پختونخوا میں احتساب کا داخلہ ممنوع ہے،انہوں نے کہا کہ نیب کیلئے امتحان کی گھڑی آ پہنچی ہے ،ڈاکٹر صمد سمیت ، کپتان کے خلاف ہیلی کاپٹر کیس اور بی آر ٹی میں ہونے والی کرپشن کے حوالے سے انکوائیری کر کے پس پردہ محرکات قوم کے سامنے لانے کا وقت آ چکا ہے۔ایمل ولی خان نے سپریم کورٹ اور پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس صاحبان سے اپیلکی ہے کہ وہ بی آر ٹی منصوبہ میں پائی جانیوالی بے قاعدگیوں اور اس منصوبہ سے عوام کے بنیادی حقوق چھیننے اور انہیں اذیت سے دوچار کرنے کے اس منصوبہ پر فوری سوموٹو ایکشن لیں اور عوام کو ملنے والی تکالیف اور اس کے ازالے کے لئے اقدامات اٹھائیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...