ایک ماہ کے دوران ، ٹریفک حادثات میں 232افرادلقمہ اجل بن گئے ، متعدد زخمی

ایک ماہ کے دوران ، ٹریفک حادثات میں 232افرادلقمہ اجل بن گئے ، متعدد زخمی

  



لاہور( کر ائم رپو رٹر) پنجاب ایمرجنسی سروس ریسکیو1122نے گذشتہ ماہ پنجاب بھر میں سات منٹ ریسپانس ٹائم کو برقراررکھتے ہوئے86180 ریسکیوآپریشن کے دوران86381 ایمرجنسی متاثرین کو ریسکیوکیا۔ ان حادثا ت میں سے 24170روڈ ٹریفک حادثات رو نما ہوئے جن میں 232 افراد لقمہ اجل بن گئے ۔ڈائریکٹرجنرل پنجاب ایمر جنسی سروس ریسکیو 1122 ڈاکٹر رضوان نصیر نے بڑھتے ہوئے روڈ ٹریفک حادثات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ زیا دہ تر لو گوں کی اموات کی وجہ ٹریفک حادثات ہیں۔انہوں نے کہا کہ ٹریفک قوانین کو نافذ کرکے اور روڈسیفٹی کے مناسب اقدامات کے ذریعے روڈ ٹریفک حادثات میں کمی لائی جا سکتی ہے۔ گزشتہ روزان خیالات کا اظہارانہوں نے پنجاب ایمر جنسی سروس ریسکیو1122 ہیڈ کوارٹرز میں ریسکیو افسران کی میٹنگ کی صدارت کے دوران پنجاب کے تمام اضلاع میں ریسکیو 1122کی ماہانہ کارکردگی کا جائزہ لیتے ہوئے کیاتاکہ سروس کی کارکردگی کو بہتر اوربِلا تفریق کے تمام شہریوں کویکساں معیارکی ایمرجنسی سروسز کی فراہمی کویقینی بنائی جا سکے۔ڈی جی ریسکیو پنجاب نے کہا کہ روڈ سیفٹی اقدامات کو نافذکر کے لاکھوں زندگیا ں بچائی جا سکتی ہیں۔ انہوں نے تمام ضلعی ایمرجنسی افسران کو ہدایت جاری کی کہ وہ ریسکیورزاور اپنی فزیکل فٹنس، ایمرجنسی گاڑیوں اور ریسکیو اسٹیشنز کی صفائی کو یقنی بنائیں۔ انہوں نے کہا کہ تقریباً50فیصد ٹریفک حادثات سے سیفٹی اقدامات کو عمل پیرا ہو کر جس میں موٹر سائیکل انتہائی بائیں لائن میں چلائیں، ہیلمٹ کا صحیح استعمال ، موٹر سائیکل کو ہمیشہ 50رفتار سے کم چلائیں اور سائیڈ مرر کا صحیح استعمال کر کے حادثات میں کمی لائی سکتی ہے۔اعداد و شمار کے مطابق زیادہ تر حادثات بڑے شہروں میں پیش آئے جن میں211آگ کے واقعات لاہور میں، 89فیصل آباد ،66ملتان،57گوجرانوالہ ،68 راولپنڈی،34 سرگودھا، 16ڈی جی خان اور سیالکوٹ میں22آگ لگنے کے واقعات پیش آئے۔ اسی طرح 5762ٹریفک حادثات لاہور میں، 2219فیصل آباد1848,ملتان ،1343 گوجرانوالہ، 900 بہاولپور،697 راولپنڈی میں جبکہ733ساہیوال ٹریفک حادثات رونما ہوئے ۔

مزید : علاقائی


loading...