ایف پی سی سی آئی ایکسپورٹ ٹرافی ایوارڈ کیلئے میکانزم بنایا جائے‘احمدجواد

ایف پی سی سی آئی ایکسپورٹ ٹرافی ایوارڈ کیلئے میکانزم بنایا جائے‘احمدجواد

  



لاہور(کامرس ڈیسک)ایف پی سی سی آئی کے بزنس مین پینل کے ترجمان احمد جواد نے کہا ہے کہ ایف پی سی سی آئی ایکسپورٹ ٹرافی ایوارڈ کیلئے ایک سسٹم اور میکانزم بنایا جائے ۔میرٹ کو یکسر نظرانداز کیا جارہا ہے اس کے لئے ایف پی سی سی آئی کی ایک کمیٹی بنائی جائے اور جو لوگ اایوارڈ کیلئے پلائی کرتے ہیں انھیں میرٹ کے مطابق ایوارڈز دیے جائیں ۔من پسند افراد کو ایکسپو ر ٹ ٹرافی ایوارڈ دینا ادارے کی افادیت اور ساکھ کو متاثر کرتی ہے ۔یہی وجہ ہے کہ ایف پی سی سی آئی اپنا مقام گرارہی ہے۔ صرف الیکشن جتینے کے لیے بغیر میرٹ کے ایونٹ منعقد کرنا بزنس کمیونٹی کے ساتھ مذاق ہے۔ ایف پی سی سی آئی اپنے وقار کے منافی ایسے کام کرنے سے گریز کرے دریں اثنا برسر اقتدار گروپ یو بی جی کے تھنک ٹینک پر تبصرہ کرتے ہوئے بزنس مین پینل کے ترجمان احمد جواد نے کہا کہ بزنس مین پینل سمجھتا ہے کہ موجودہ ای سی اور جی بی ممبران کا پہلے حق ہے کہ ان کو متعلقہ پوسٹ دی جائیں۔ من پسند افراد اور ریلو کٹوں کو نوازنے کیلئے چیف کوآرڈینیٹرز کے عہدے نہ دیے جائیں۔اگر یو بی جی بزنس کمیٹی کے مسائل حل کرنے میں سنجیدہ ہے تو موجودہ ایگزیکٹو کمیٹی کو چیف، چیئرمین یا کوآرڈی نیشن کے عہدے دیئے جائیں.پاک بھارت حالیہ کشیدگی پر بات کرتے ہوئے احمد جواد نے کہا جب بھارت کی حکومت نے مصنوت پر دوسو فیصد کسٹم ڈیوٹی عائد کی تو یہ پاکستان سے تجارت ختم کرنے والی بات تھی تو اس وقت ایف پی سی سی آئی نے پاکستان کے حق میں نہ اپنا موقف دیا نہ ہی کوئی بیان جاری کیا جو وقت کی ضرورت تھی۔

انھوں نے کہا ایف پی سی سی آئی ایک ایپکس ٹریڈ باڈی ہے اور جبکہ اس موقع پر پوری بزنس کمیونٹی پاک فوج اور حکومت کے شانہ بشانہ کھڑی ہے تو اس موقع پر ایف پی سی سی آئی کی موجودہ قیادت کو ایک سخت پیغام دینا چاہیے تھاکہ اگر بھارت نے حالیہ کسٹم ڈیوٹی کو واپس نہ لیا تو ہمیں بھی بھارت کے ساتھ تجارت کا کوئی شوق نہیں ہے اور اس مسئلے کو فیڈریشن آف انڈین چیمبر آف کامرس کے ساتھ اٹھاتے تاکہ یہ ایشو پاکستان کا تجارتی سطح پر دنیا کے سامنے آتا اوردنیا کو پیغام جاتا کہ پاکستان کے پریمئر تجارتی ادارے ایف پی سی سی آئی نے بھارت کو تگڑا جواب دیاہے۔

مزید : کامرس