پاکستان اور سنگاپورمیں تجارتی وفود کے تبادلے کیے جائیں‘ شاہ فیصل آفریدی

پاکستان اور سنگاپورمیں تجارتی وفود کے تبادلے کیے جائیں‘ شاہ فیصل آفریدی

  



لاہور(نیوز رپورٹر)پاکستان اور سنگا پور کے درمیان موجود ووسیع تجارتی مواقع سے بھرپور استفادہ کیلئے تجارتی وفود کے تبادلوں کو فروغ دیا جائے۔ یہ بات پاک چین جوائینٹ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شاہ فیصل آفریدی نے یہاں سنگا پور سے آنے والے ایک تجارتی وفد سے ملاقات کے دوران کہی۔ اس موقع پر انکے ہمراہ پاک چین جوائینٹ چیمبر سابق صدر ایس ایم نوید اور متعدد اراکین مجلس عاملہ بھی موجود تھے ۔ جبکہ مہمان وفد کی قیادت سنگاپور کے بزنس گروپ برائے مڈل ایسٹ کے چیئرمین اور جنوبی ایشیا گرو پ کے وائس چیئرمین شمشیر زمان کر رہے تھے۔ وفد میں سنگا پور کے ممتاز بزنسمین اور بڑے کاروباری اداروں کے نمائیندے شامل تھے۔ شاہ فیصل آفریدی نے وفد کے اعزاز میں خطبہءِ استقبالیہ پیش کر تے ہوئے کہا کہ پاکستان خطے میں دوسری بڑی معاشی طاقت ہے ، لیکن پاکستان سنگا پور کو صرف 68ملین ڈالر کی اشیا برآمد کر رہا ہے جبکہ سنگاپور سے آنے والی درآمدات کا حجم 865 ملین امریکی ڈالر ہے۔حالانکہ پاکستان کیلئے سنگا پور میں پاکستان کیلئے وسیع مواقع موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ باہمی تجارت کے توازن کو بہتر بنانے کیلئے دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی وفود کے تبادلوں کو فروغ دیا جانا چاہیے۔ انہوں نے بتا یا کہ پاک چین جوائینٹ چیمبر اس مقصد کیلئے دونوں ملکو ں کے درمیان بزنس میچ میکنگ کی مہم شروع کر رہا ہے۔ اس موقع پر پاک چین جوائینٹ چیمبر کے سابق صدر ایس ایم نوید نے اپنے خطاب میں بتا یاکہ پاکستان ایک بڑا زرعی مرکز ہے یہاں دنیا کا بہترین پھل اور سبزیاں پید ا ہوتی ہیں جو دیگر ملکوں کی طرح سنگا پور کو فراہم کی جاسکتی ہیں انہوں نے وفد سے اپیل کی کہ وہ پھلوں ، سبزیوں اور معدنی مصنوعات کی خرید کیلئے پاکستان کو ترجیح دیں۔

انہوں نے وفد کو پاکستان میں سرمایہ کاری کے مواقع پر غور کی بھی دعوت دی اور بتا یا کہ پاکستان میں توانائی، انفرا سٹرکچر، صحت ، تعلیم اور اشیائے صرف کے شعبوں میں سرمایہ کار ی کے منافع بخش مواقع پائے جاتے ہیں۔قبل ازیں سنگا پور وفد کے قائد شمشیر زمان نے اپنے خطاب میں بتا یا کہ 1965میں جب سنگا پور کو آزادی ملی تو پاکستان پہلا ملک تھا جس نے اس کی سالمیت کو تسلیم کیا۔ انہوں نے کہا کہ سنگا پور شہری آبادکاری ، بندرگاہوں کی تعمیر اور شپنگ کے شعبہ میں خصوصی مہارت رکھتا ہے جو پاکستان کیلئے بھی بے حد مفید ہو سکتی ہے۔انہوں نے مذکورہ شعبوں میں سرمایہ کاری اور خدمات کی فراہمی کی پیشکش کی اور پاکستان میں کم قیمت گھروں کی تعمیر کیلئے شروع کئے جانے والے منصوبے میں تعاون کی یقین دہانی بھی کرائی۔بعد ازاں اجلاس میں موجود پاکستانی صنعتکاروں اور تاجروں کی سنگا پور ی وفد کے اراکین کے ساتھ بی ۲ بی میٹنگز کا اہمتام بھی کیا گیا جس میں سی پیک کے تحت منظر عام پر آنے والے تجارتی مواقع کے حوالے سے بھی مشترکہ سرمایہ کاری کی تجاویز پر غور کیا گیا۔

مزید : کامرس


loading...