محکمہ زکوۃ نے ڈسٹرکٹ اور تحصیل ہسپتالوں کے فنڈز روک لئے، مریض ادویات سے محروم

محکمہ زکوۃ نے ڈسٹرکٹ اور تحصیل ہسپتالوں کے فنڈز روک لئے، مریض ادویات سے ...

  



لاہور(جاوید اقبال)پنجاب کے محکمہ زکواۃ نے 36 اضلاع میں واقع ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتالوں اور ایک سو آٹھ تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتالوں کے فنڈز روک لیئے ہیں۔جس سے ان ہسپتالوں میں واقع غریب مریضوں کو زکواۃ سے علاج معالجہ کے لئے مفت ادویات فراہم کرنے کے لئے سوشل میڈیکل آفیسرز کے دفاتر ویران ہو گئے ہیں اور مریض زکواۃ سے علاج کی سہولیات سے محروم ہو گئے ہیں۔فنڈز جولائی 2018 میں جاری کئے جانے تھے مگر جب رواں سال کے خاتمے میں تقریباٗ ساڑھے تین ماہ باقی ہیں ۔ابھی تک سیکرٹری زکواۃ اور ان کے دست راس ڈپٹی سیکرٹری صفی اللہ گوندل جنہیں 20 روز قبل تبدیل کر دیا گیامگر غیر قانونی طور پر ابھی تک انھوں نے چارج نہیں چھوڑا ہسپتالوں کو فنڈز جاری نہیں کر سکے بتایا گیا ہے کہ وفاقی حکومت نے چھ ماہ قبل محکمہ زکواۃ پنجاب کو چار ارب سات کروڑ اسی لاکھ کے فنڈز جاری کئے محکمہ نے یہ فنڈز ٹیچنگ ،ڈسٹرکٹ ،تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتالوں کو جاری کرنے تھے علاوہ ازیں زکواۃ کی رقوم سے ہر ضلع میں غرباء کے لیے شادی گرانٹس،ماہانہ گزارہ الاؤنس ،تعلیمی وظائف ،ووکیشنل انسٹیٹیوٹس اور دینی مدارس کے لئے فنڈز جاری کرنے تھے ،صرف چند ٹیچنگ ہسپتالوں کو پچاس فیصد تک پہلی قسط جاری کی اور بقایا ادائیگی روک لی دوسری طرف صوبہ بھر کے ضلعی اور تحصیل سطح کے ہسپتالوں کو تاحال زکواۃ کے فنڈز کا ایک ٹیڈی پیسہ بھی جاری نہیں کیا ان ہسپتالوں سے زکواۃ سے ادویات لینے والے گردے ،ڈائیلسز،کینسر ،یرقان سمیت دیگر امراض کے رجسٹرڈ مریضوں اور دیگر مستحقین کی تعداد چار لاکھ ہے جو کے فنڈز نہ ہونے کی وجہ سے ادویات کو ترس گئے ہیں۔محکمہ زکواۃ نے زکواۃ کمیٹیوں جن کی تعداد ہزاروں میں ہے ان کو بھی فنڈز جاری نہیں کئے اس حوالے سے پیشنٹ پروٹیکشن کونسل آف پاکستان کے چیئر مین غلام حسین سپریم ایڈوائزری کونسل کے کنوینر فیاض رانجھااور لیگل سیل کے سربراہ اظہر صدیق ایڈووکیٹ کا کہنا ہے کہ محکمہ زکواۃ پنجاب کے پاس چار ارب روپے کے فنڈز موجود ہیں جو در حقیقت صاحب حیثیت لوگوں کی دی ہوئی زکواۃ کے پیسے ہیں ۔افسوس کا مقام ہے کہ زکواۃ کے پیسے غریب مریضوں اور دیگر ضرورت مندوں پر خرچ کرنے کی بجائے زکواۃ کے خزانے میں پڑے ہیں ایسا پہلی دفعہ ہوا کہ سیکرٹری اور ان کے ڈپٹی سیکرٹری کی نا اہلی کی وجہ سے ہوا ہے انھیں فی الفور تبدیل کیا جائے اور غریبوں کے زکواۃ روکنے پر ان خلاف کارروائی کی جائے اور چیف جسٹس از خود نوٹس لیں اور پہلے سے تبدیل شدہ ڈپٹی سیکرٹری کو فی الفور فارغ کیا جائے ۔اس حوالے سے سیکرٹری زکواۃ عاصم اقبال سے بات کی گئی تو انھوں نے کہا کہ معاملہ علم میں نہیں ہے معاملے کی فوری تحقیقات ہوں گی یہ زکواۃ کا پیسہ ہے اور مستحقین پر ہی خرچ ہو گا ۔ڈپٹی سیکرٹری صفی اللہ گوندل تبدیل ہو چکے ہیں اگر ان کی کوتاہی ثابت ہوئی تو کارروائی کی جائے گی ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1