بھارت کو پاک فضائیہ نے شکست دی ، انڈیا کے پاس 10دن کا اسلحہ ، 68فیصد جنگی سامان ناقابل استعمال ، کشیدگی میں کمی کیلئے امریکہ نے موثر کوششیں کیں: امریکی میڈیا

بھارت کو پاک فضائیہ نے شکست دی ، انڈیا کے پاس 10دن کا اسلحہ ، 68فیصد جنگی سامان ...

  



واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک،آن لائن) امریکی اخبار نے اپنی رپورٹ میں بھارتی عسکری صلاحیت کی قلعی کھول کر رکھ دی اور کہا ہے جنگ کی صورت میں بھارت کے پاس اپنے فوجیوں کو فراہم کرنے کیلئے صرف 10 دن کا اسلحہ ہے۔نیویارک ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں پاک فضائیہ کے مقابلے میں بھارتی فضائیہ کی پسپائی کو شکست سے تعبیر کیا اور کہا بھارتی فوج کی اہلیت تشویشناک حد تک متاثر ہے۔بھارتی فوج کا 68 فیصد جنگی ساز و سامان اتنا قدیم ہے کہ اسے باضابطہ طور پر ناقابل استعمال سمجھا جاتا ہے۔ پاکستان اور بھارت کی فضائی حدود میں دونوں فوجوں کے طیاروں کی Dogfight (طیاروں کا فضا میں لڑنا) بھارت کی عسکری صلاحیت اور بھارتی فوج کی کارکردگی کا امتحان تھا، جس میں پاکستان نے کامیابی سے بھارتی فضائیہ کے سوویت دور کا MiG21 طیارہ مار گرایا۔رپورٹ میں کہا گیا بھارتی فوج کو لاحق چیلنجز کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ہیں، گزشتہ 5 دہائیوں میں دونوں ممالک کے درمیان یہ پہلی فضائی جھڑپ تھی جو بھارتی فورسز کا امتحان تھا اور بھار ت کو ایک ایسی فوج کے مقابلے میں پسپائی کا سامنا کرنا پڑا جو سائز میں آدھی اور جس کا دفاعی بجٹ بھارت کے مقابلے ایک چوتھائی ہے ۔ رپورٹ کے مطابق بھارت کے 45 ارب ڈالر کے ملٹری بجٹ میں سے صرف 14 ارب ڈالر جدید ہارڈوئیر خریدنے پر خرچ کیے جاتے ہیں جبکہ باقی بجٹ تنخواہوں سمیت اخراجات پر خرچ کیا جاتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق بھارتی دفاعی پارلیمنٹری کمیٹی کے رکن گورو گوگوائی کا کہنا ہے بھارتی فوج جدید اسلحے کی فراہمی کے بغیر ہی اکیسویں صدی کے ملٹری آپریشنز کرنے پر مجبور ہے۔ پاکستان کیساتھ فضائی تصادم میں شکست کے بعد بھارت کی بوسیدہ فوج پرسوالات اٹھنے لگے ہیں۔امریکی اخبار نے یہ دعویٰ بھی کیا ہے کہ امریکی انتظامیہ نے پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی کم کرانے کی کوشش کی اورامریکہ افغان امن عمل کو تحفظ دینے کی کوششوں میں مصروف ہے، پیر کو شا ئع کر دہ ر پو رٹ میں کہا گیا کشیدگی کم کرنے میں امریکہ نے موثر کوششیں انجام دیں،امریکی اخبار کے مطابق کشیدگی کے دوران افغان امن عمل کی حمایت کرنے کی پاکستانی صلاحیت خطرے میں ہے۔دوسری طرف امریکی ادارے نے آزاد کشمیر میں بھارتی دراندازی کیخلاف کارروائی میں ایف 16طیارے کے استعمال کے بھارتی الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے پاکستان نے بھارتی طیارے کو مار گرانے کیلئے جے ایف 17 تھنڈر جنگی طیارے کا استعمال کیا،جے ایف 17 تھنڈر چینی ساختہ جنگی طیارہ ہے جسے پاکستان اور چین نے مشترکہ طور پر تیار کیا۔امریکی نشریاتی ادارے کی رپورٹ میں کہا گیا ہے بھارتی طیارے کو گرانے اور پائلٹ ابھی نندن کو حراست میں لینے کی کارروائی میں ایف سولہ طیارہ استعمال ہونے کے کوئی ٹھوس شواہد موجود نہیں ،رپورٹ میں اس بات کی بھی نشاندہی کی گئی ہے کہ بھارتی طیارہ روسی ساختہ مگ 21 تھاجو 1960 سے بھارتی فضائیہ کے زیر استعمال ہے اور پاکستان کی جوابی کاروائی میں تباہ ہونے والا طیارہ مگ21ہی تھا،اس بارے میں گفتگو کرتے ہوئے ایشیا ء پیسیفک کالج آسٹریلیا کے نشانک موٹوانی نے بتایا یہ طیارے مختلف حادثات کا شکار ہوچکے ہیں ۔

امریکی میڈیا

مزید : صفحہ اول


loading...