پنجاب اسمبلی ،حکومت کو وزیراعلیٰ کی موجودگی میں کورم پورانہ ہونے پر سبکی کا سامنا

پنجاب اسمبلی ،حکومت کو وزیراعلیٰ کی موجودگی میں کورم پورانہ ہونے پر سبکی کا ...

  



لاہور( نمائندہ خصوصی)پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں حکومت کو قائد ایوان وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار کی موجودگی کے باوجودکورم پورا کر نے میں ناکامی پر ایک بار پھر سبکی کا سامنا کرنا پڑا، کورم پورا نہ ہونے پر پینل آف چیئرمین میاں شفیع نے اجلاس آج منگل کی صبح 11 بجے تک ملتوی کر دیا۔اس سے قبل صوبائی وزیر جنگلات ماہی پروری سردار سبطین خان نے ایوان میں پالیسی بیان جاری کرتے ہوئے کہا حکو مت نے ماہی پروری پر نئی پالیسی مرتب کر لی ہے جس کے بعد پنجاب بھر میں لوگوں کو سستی، معیاری مچھلی وافر مقدار میں میسر ہو گی ،مچھلی کی وافر مقدار کی دستیابی کی صورت میں بکرے اور مرغی کے گوشت کی قیمتوں میں نمایاں کمی ہوگی، صوبے کے عوام کو بہت جلد دو سے ڈھائی سو رو پے کلو سستی مچھلی ملے گی، صوبائی وزیر سردار سبطین خان نے کہا ہم نے معیاری بیج تیار کرلیاہے پہلے یہ بیج تھائی لینڈ سے آتا تھا اب اسے خود تیا ر کررہے ہیں جس سے محکمہ فشریز میں انقلابی تبدیلیاں رونماہونگی ،صوبائی وزیر خوراک سمیع اللہ چوہدری نے ہمارا سب سے بڑا مسئلہ سا بقہ حکومت کی جانب سے کسانوں کو دی گئی سبسڈی ہے،ن لیگ کی حکومت نے دوارب روپے سے زائد گندم پر کسانوں کوسبسڈی دی جس سے محکمہ خوراک کے انتظامی معاملات خراب ہوئے ہم تو سابق حکومت کے غلط کاموں کو درست کررہے ہیں،ن لیگ کی حکومت نے گندم کی خریداری کیلئے مختلف بینکوں سے 447ارب روپے قرضہ لیا،محکمہ خوراک کے پاس گندم کے ذخائر موجود ہیں، ان ذخائر کو ریلیز کیا جارہا ہے تاکہ آئندہ گندم کو سٹاک کیاجاسکے ،ن لیگ کے رکن پنجاب اسمبلی ملک ارشدایڈووکیٹ نے صوبائی وزیر کی جانب سے پیش کئے گئے ا عد ا دوشمارکو جھوٹ کا پلندہ قرار دیدیااور معاملہ کمیٹی کے سپرد کرنے کا مطالبہ کر دیاسپیکر پرویز الہٰی نے سٹاک گندم کی صورتحال پر معاملہ کمیٹی کے سپر د کر تے ہوئے صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت کو معاملے کی تحقیقات کرکے رپورٹ سات روز میں جمع کروانے کی ہدایت کر دی کہ کتنی گندم خراب اور کتنی ذخیرہ کی گئی کا مکمل جواب جمع کروائیں، دریں اثناء پنجاب اسمبلی کی آفیشل گیلری میں سرکاری افسران کی عدم مو جو د گی پر ایوان کا متفقہ نوٹس سپیکر اپوزیشن اور حکومت کا گیلری میں آفیشلز نہ ہونے پر اظہار ناراضگی توجہ دلاؤ نوٹس اور تحریک التوائے کار کے د و ر ان آفیشلز کیلئے مختص گیلری خالی ہے، سمیع اللہ خان نے کہا کوئی سرکاری آفیسر نکات نوٹ کرنے کیلئے موجود نہیں ،سپیکر نے کہا وزیر قانون اس معاملے کا جائزہ لیں آفیسرز لازمی ہونے چاہیں،یہ یقینی بنایاجائے وقفہ سوالات کے دوران متعلقہ محکمے کا سیکرٹری لازمی موجود ہو، سپیکر کی رولزہمیں اپنے آپ کو منواناہوگا آفیسرز کیوں موجود نہیں ،وزرا ء اپنے اپنے محکمے کا نوٹس لیں۔

پنجاب اسمبلی

مزید : صفحہ آخر


loading...