ایم کیو ایم لندن کے ٹارگٹ کلرز کے دوران تفتیش اہم انکشافات

ایم کیو ایم لندن کے ٹارگٹ کلرز کے دوران تفتیش اہم انکشافات

  



کراچی (کرائم رپورٹر)کانٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ کے ہاتھوں گرفتار پولیس اہلکار اور ایم کیو ایم لندن کے سفاک ٹارگٹ کلرز نے دوران تفتیش سب کچھ اگل دیا۔ ٹارگٹ کلرز نے کس کو اغوا کیا کہاں لیجا کر قتل کیا، پولیس کو تفصیلات سے آگاہ کر دیا۔محافظ کے روپ میں چھپا قاتل، گرفتار پولیس اہلکار ہارون اپنے ساتھی ظفر سپاری اور جاوید بنگالی کے ساتھ 5 سال تک قتل و غارت پھیلاتا رہا،ایم کیو ایم لندن کے گرفتار ٹارگٹ کلرز نے اہم راز افشاں کر دیئے۔گرفتار ٹارگٹ کلرز نے 2009 میں کورنگی صنعتی ایریا سے ایک شخص کو اغوا کرکے ملیر ندی لیجا کر ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنایا، سال 2010 میں ایم کیو ایم حقیقی کے کارکن شفیق کو اغوا کے بعد ملیر ندی لیجا کر موت کے گھاٹ اتارا گیا۔ 2011 میں دو افراد کو لسانی بنیاد پر قتل کرنے کے بعد لاشوں کو ٹھیلے پر ڈال کر ملیر ندی میں ڈال دیا گیا۔ٹارگٹ کلرز نائن ایم ایم اور ایس ایم جی کے ساتھ بلٹ پروف جیکٹ کا بھی استعمال کرتے رہے۔ گرفتار ملزمان نے دوران تفتیش ٹارگٹ کلر ٹیم کے اہم رکن نبیل شری سمیت 15 ساتھیوں کے نام بھی اگل دیئے۔ 10 افراد کے قتل میں ملوث ملزمان ظفر سپاری، جاوید بنگالی وارداتوں کی تفصیلات بتاتے رہے۔

مزید : صفحہ اول