گورنر سندھ عمران اسماعیل ’’نے گورنر شکایتی سیل‘‘ کا افتتاح کر دیا

گورنر سندھ عمران اسماعیل ’’نے گورنر شکایتی سیل‘‘ کا افتتاح کر دیا

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر) گورنرسندھ عمران اسماعیل نے پر وقار و سادہ تقریب میں گورنر ہاؤس میں’’گورنر شکایتی سیل‘‘ کا افتتاح کردیا۔اس موقع پر چیف سی پی ایل سی ، پولیس کے افسران اور دیگر اعلیٰ حکام بھی موجود تھے ۔ شکایتی سیل میں عوام اپنی شکایات براہ راست درج کراسکیں گے اس کے علاوہ گورنرہاؤ س کی ویب سائٹ www.governorsindh.gov.pk اور فون نمبرز 99206202 ۔021، 99202337 ۔021 پر بھی عوام اپنی شکایات درج کراسکتے ہیں۔افتتاحی تقریب میں سی پی ایل سی، قانون نافذ کرنیوالے اداروں اور کراچی الیکڑانکس ڈیلرز ایسوسی ایشن کی مشترکہ کارروائی کے ذریعہ برآمد ہونیوالے 100 سے زائد مسروقہ موبائل فونز مالکان کے حوالے کئے گئے۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گورنرسندھ نے کہا کہ گورنرہاؤس شکایتی سیل کو وزیر اعظم عمران خان کے پاکستان سٹیزن پورٹل کے ساتھ منسلک کیا جائے گااب جو شکایات سندھ سے وہاں جاتی ہیں اس کا بھی یہاں سے ازالہ کیا جائے گا اس میں سندھ حکومت کے دیگر ادارے بھی شامل ہوں گے ،ہفتہ میں ایک دن اس دفتر میں بیٹھ کر میں خود مسائل حل کرونگا۔انہوں نے مزید کہا کہ سی پی ایل سی ایک مستند ادارہ ہے جبکہ حال ہی میں سندھ انڈسٹریل لائژن کمیٹی کا قیام بھی عمل میں لایا گیا ہے جس میں انڈسٹری کے مسائل حل کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سی پی ایل سی کے کراچی میں سات دفاتر ہیں لوگ کہیں بھی اپنی شکایات درج کراسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پوری کوشش ہے کہ گورنر ہاؤس متحرک رہے تاکہ عوام کے مسائل زیادہ سے زیادہ حل ہوں اسی مقصد کے تحت ہی شکایتی سیل قائم کیا جارہا ہے اب صوبہ کے لوگ پانی ،بجلی ،گیس ،نا رکوٹکس سمیت دیگر مسائل یہاں درج کراسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ شکایات عام ہیں کہ اسکولوں اور کالجوں کے باہر مبینہ طور پر منشیات سپلائی ہورہی ہے پورے یقین کے ساتھ کہ رہا ہوں کہ اب کسی منشیات سپلائی کرنے والے کو نہیں چھوڑیں گے ۔انہوں نے سی پی ایل سی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یہ ادارہ فعال کردار ادا کررہا ہے اس ادارہ نے اب تک ساٹھ ہزار موبائل فونزبرآمد کرکے لوگوں کو دئیے لیکن ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے جب شہر میں موبائل فون چھیننا بند ہوجائیں گے تب ہی ہماری اصل کامیابی ہوگی۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے گورنرعمران اسماعیل نے کہا کہ کراچی میں پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل)کا انعقاد خوش آئند ہے ہمیشہ کی طرح اس بار میں بھی اپنی فیملی کے ساتھ تمام میچز اسٹیڈیم میں دیکھوں گااسطرح کی سرگرمیوں کو بحال کرنے کی بھرپور کوشش کررہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی قوم باشعور ہے وہ جانتے ہیں کہ عمران خان کسی سے ڈرنے والا نہیں جذبہ خیر سگالی کے تحت بھارتی پائلٹ ابھی نندن کو واپس کیالیکن کلبوشن کو کسی صورت نہیں چھوڑیں گے بھارت نے ایڈ ونچر کرنے کی کوشش کی جس کا بھرپور جواب دیا گیا۔ایک اور سوال کے جواب میں گورنرسندھ نے کہا کہ نیب خود کار ادارہ ہے سیاسی انتقام ہوتا تو حکومت سے تعلق رکھنے والے تین وزیر فارغ نہیں ہو سکتے تھے واضح کردوں کسی بھی جماعت سے تعلق ہو نیب میں انکوائری آئے گی تو اسے بھگتنا ہوگی ،نیب میں ایک بھی شکایت ہماری حکومت نے نہیں ڈالی یہ تمام پہلے کی شکایتیں ہیں ۔

کراچی (اسٹاف رپورٹر) گورنرسندھ عمران اسماعیل نے کہا ہے کہ پاکستانی خواتین وژنری صلاحیتوں سے مالا مال ہیں ،ملک کی معاشی ترقی ، اقتصادی سرگرمی اور تجارت سمیت دیگر شعبہ ہائے زندگی میں خواتین کا کردار نہایت اہمیت کا حامل ہے ، خواتین کی صلاحیتوں سے بھرپور استفادہ حاصل کرنے کے لئے موجودہ حکومت ہر شعبہ میں خواتین کی بھرپور نمائندگی کو یقینی بنارہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گورنرہاؤس میں محترمہ فضا ذیشان کی قیادت میں 20 رکنی وفد سے ملاقات میں کیا ۔ ملاقات میں خواتین کے حقوق ، شعبہ ہائے زندگی میں کردار ، قومی ، اقتصادی ، تجارتی ترقی میں خواتین کی نمائندگی اور اہمیت کے حامل دیگر امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔گورنرسندھ نے مزید کہا کہ خواتین کی تخلیقی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے کے لئے مختلف پروگرامز جاری ہیں جہاں پر خواتین کو بنکاری ، انتظامی امور ، سلائی کڑائی ، کھانا پکانا ،امور خانہ داری اور دیگر شعبہ کی تربیت فراہم کی جارہی ہے ،موجودہ حکومت کی بھرپور کوشش ہے کہ شعبہ ہائے زندگی میں خواتین کو مناسب نمائندگی فراہم کی جائے ۔انہوں نے کہا کہ بیت المال کے ذریعہ خواتین کو تعلیم ، روز مرہ کے امور اور جہیز سمیت دیگر سہولیات کی فر اہمی کے لئے مالی تعاون فراہم کیا جا رہا ہے اس ضمن میں بیت المال سندھ کے انچارج حنید لاکھانی بھرپور کاوشیں بروئے کار لارہے ہیں ۔ ملاقات میں اوورسیز خاتون نے سالڈ ویسٹ منیجمنٹ منصوبہ اور صحت سے متعلق دیگر منصوبوں میں اپنی دلچسپی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت چاہئے تو اوورسیز پاکستانی خواتین ملک کے مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کرسکتی ہیں ۔ گورنرسندھ نے کہا کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم کے مطابق جناح پوسٹ گریجویٹ میڈیکل سینٹر ، NICVD اور NICH وفاق کا حصہ قرار دیا ہے ان میڈیکل سینٹر زکے منصوبوں میں خواتین کی بھرپور نمائندگی کو یقینی بنایا جائے گا۔

مزید : صفحہ اول