ملک کی تاریخ میں پہلی بار بھارتی جارحیت کیخلاف متفقہ قرار داد منظور کی گئی : اسد قیصر

ملک کی تاریخ میں پہلی بار بھارتی جارحیت کیخلاف متفقہ قرار داد منظور کی گئی : ...

  



صوابی(بیورورپورٹ)سپیکر قومی اسمبلی اور پی ٹی آئی کے رہنما اسد قیصر نے کہا ہے کہ ملک کی تاریخ میں پہلی بار تمام سیاسی جماعتوں نے متفقہ طور پر بھارتی جارحیت کے خلاف قرار داد پاس کی اور کوئی ایسی پارٹی نہیں تھی جس نے اس پر دستخط نہ کئے ہو اور مجھے بہت خوشی ہوئی کہ پہلی دفعہ اپوزیشن سمیت تمام جماعتوں نے سیاسی اختلافات بالائے طاق رکھ کر قومی ایشو پر اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کر کے اکٹھی ہوئی دورہ صوابی کے موقع پر صوابی الیکٹرانک میڈیا ایسو سی ایشن سے گفتگو کر تے ہوئے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا کہ پاکستان اور بھارت دونوں ممالک کو چونکہ معاشی طور پر چیلنجز کا سامنا ہے اس لئے غربت ، بے روزگاری کے خلاف مقابلہ اور جنگ کر نی چاہئے اور اپنے اپنے ملکوں میں اچھی تعلیم اور بہتر علاج کے لئے جدوجہد ہونی چاہئے انہوں نے کہا کہ بھارت کو اب بھی موقع ہے کہ وہ امن کی طرف بڑھیں ۔ ہم امن چاہتے ہیں پاکستان کے عوام امن پسند ہے اور یہ بھی چاہتے ہیں کہ بنیادی ایشوز پر فوکس کریں جو کہ ہمارے لئے سب سے چیلنج انوارمنٹ ہے انہوں نے کہا کہ ہم اپنی توانائیاں غلط طور پر استعمال کر تے ہیں ہمیں شدید چیلنجز کا سامنا ہے اگر اس طرف توجہ نہیں دی گئی تو حالات کچھ بھی ہو سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر بھارتی حکومت نے دوبارہ غلطی کی تو جس طرح جواب ان کو ملا تھا اسی طرح جواب دوبارہ بھی ملے گا ۔ بھارت کو واضح پیغام مل گیا کہ پاکستان کے اندر صلاحیت موجود ہے ہم جہاں چاہے حملہ کر سکتے ہیں انہوں نے پاک بھارت کے در میان کشیدگی ختم کرنے کے لئے عالمی دنیا کے ثالثی کر دار کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ اس حوالے سے ہمارا موقف واضح ہے چونکہ بھارت دنیا کے سامنے حقائق نہیں لا سکتے اور مذاکراتی میز پر بیٹھ کر کوئی شواہد نہیں لا سکتا اس لئے وہ ثالثی کر دار سے انکار کر رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان امن چاہتا ہے ہم امن پسند ہے پاک بھارت جنگ دونوں ممالک کے مفاد میں نہیں انہوں نے کہا کہ بھارتی میڈیا نے سارا ماحول خراب کر دیا ہے گمراہ کن پروپیگینڈہ کسی کے مفاد میں نہیں بھارتی میڈیا کو حقیقت پسند ہونا چاہئے انہوں نے کہا کہ او آئی سی میں پاکستان کی شرکت نہ کرنے کا فیصلہ پارلیمنٹ نے کیا تھا تاہم اس اجلاس میں کشمیر بارے میں ہمارے موقف کی تائید حاصل ہوئی ہے اور او آئی سی کے اجلاس میں شرکاء نے بھارتی جارحیت کی مذمت بھی کی جو ہماری حکومت کی سفارتکاری کی کامیابی ہے۔انہوں نے کہا کہ سعودی وزیر خارجہ کا دورہ بھارت منسوخ کرنا مودی سرکار کو الیکشن فوبیا ہے۔ وہ الیکشن جیتنے کے لئے ہر قسم اقدامات کر سکتے ہیں بھارت کے عدم تعاون کی وجہ سے سعودی وزیر خارجہ نہیں آرہا ہے انہوں نے کہا کہ اس وقت اقوام متحدہ سمیت پوری دنیا اور انٹر نیشنل کمیونٹی پاکستانی موقف کی حمایت کر تے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی پارلیمنٹ اس حوالے سے حکومت اور فورسز کے ساتھ کھڑی ہو گئی ہے جب کہ بھارتی پائلٹ کی رہائی کو پوری دنیا میں سراہا گیا ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...