فیاض الحسن چوہان کو کس کے دباؤ پر ہٹایا گیا ؟ آئینی ماہر بابر ستار نے بتا دیا

فیاض الحسن چوہان کو کس کے دباؤ پر ہٹایا گیا ؟ آئینی ماہر بابر ستار نے بتا دیا
فیاض الحسن چوہان کو کس کے دباؤ پر ہٹایا گیا ؟ آئینی ماہر بابر ستار نے بتا دیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) آئینی ماہر بابر ستار نے کہاہے کہ کسی وزیر کی جانب سے نسل پرستی کی بات کرنا ، ریاست کی پالیسی کو ظاہر کرتا ہے ، فیاض الحسن چوہان کو سول سوسائٹی کے دباؤ پر نہیں ہٹایا گیا بلکہ تحریک انصاف کے اندر سے آوازیں آرہی تھیں۔

جیونیوز کے پروگرام ”رپورٹ کارڈ“ میں گفتگو کرتے ہوئے بابر ستار نے کہا کہ فیاض الحسن چوہان اپنے ریمارکس پر مستعفی ہوگئے ہیں، اب ان کو چوک میں لٹکا کرجوتے تو نہیں مارے جاسکتے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک ٹھیک فیصلہ ہے ، ان کو وزیر اطلاعات لگائے جانے کی کوئی وجہ سامنے نہیں آرہی تھی ، ان کی جانب سے غلطیاں بھی کی گئیں، ایک وزیر کی جانب سے نسل پرستی کی بات کرنا ، اس ریاست کی پالیسی کو ظاہر کرتا ہے ، فیاض الحسن چوہان کو سول سوسائٹی کے دباؤ پر نہیں بلکہ تحریک انصاف کے اندر سے آوازیں آرہی تھیں کہ ان کو عہد ے سے ہٹایا جائے ۔

انہوں نے کہا کہ ہے کہ ٹرمپ کی اپنی معاشی پالیسی ہے ، ان کی جانب سے چائنہ اور یورپ پر دباؤ بڑھایا گیا ہے اور مزید دباؤڈال رہے ہیں ، بھارت کے ساتھ بھی ان کی بات چل رہی تھی لیکن امریکہ کے اس اقدام سے بھارت کا اثر و رسوخ کم نہیں ہوگا ۔

مزید : قومی


loading...