تعصب پسند گنگولی کو پی سی بی کا کرارا جواب!

تعصب پسند گنگولی کو پی سی بی کا کرارا جواب!
 تعصب پسند گنگولی کو پی سی بی کا کرارا جواب!

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

بھارتی کرکٹ بورڈ کے سربراہ اور تعصب رکھنے والے کھلاڑی سارو گنگولی نے ایک بیان دیا جس میں انہوں نے کہا کہ ایشیا کپ 2020ء پاکستان کی بجائے دبئی میں کھیلا جائے گا جس کے بعد پی سی بی نے ان کے اس بیان کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے انہیں یہ باور کروایا کہ اجلاس ابھی ہونا ہے اور آپ ایشین کرکٹ کونسل کے ممبر ہیں نا کہ صدر،جس کا آپ فیصلہ کر سکیں،ابھی فیصلہ ہونا ہے اور ایشین کرکٹ کونسل کے ایگزیکٹو ممالک کی ہمدردیاں اس کپ کے لیے پاکستان کے ساتھ ہیں۔ستمبر میں ہونے والے اس کپ کے لیے پاکستان میں ہونے والے پی ایس ایل سیزن5کے انتظامات دیکھ کر اس بات کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ ہمارا ملک کسی بھی طرح ہندوستان سے کم نہیں اور یہاں ہر مذہب،ہر فقہ سے تعلق رکھنے والا شخص آزاد زندگی بسر کر رہا ہے جبکہ بھارت میں آئے روز ہونے والے دنگے،فساد کے باعث ہزاروں،لاکھوں زندگیاں جان کی بازی ہار جاتی ہیں۔جب ایسے ماحول میں آپ اپنے ملک میں کرکٹ کروا سکتے ہیں اور دیگر کھیل ہو سکتے ہیں تو پھر بھارتیوں کو کیا موت پڑی ہے جو پاکستان کا سکون اور امن بر باد کرنے پر ڈٹے ہیں۔

پی سی بی کا بھارتی کرکٹ بورڈ کے سربراہ کو اس قسم کے کرارے جواب سے یہ بات صاف ظاہر ہوتی ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ اب میں نا مانوں والی بھارتی ہٹ دھرمی کو خاطر میں لانے کی بجائے اپنے کام پر عمل پیرا ہے اور اس حوالے سے ایشیا کپ کی میزبانی کے لیے تمام تر انتظامات اور ٹیموں کو مکمل فول پروف سیکیورٹی فراہم کرنے کے حوالے سے خاصہ سر گرم نظر آتا ہے۔اب رواں ماہ کے آخر میں ہونے والے آئی سی سی اور ایشین کرکٹ کونسل کے اجلاس میں اس بات کا فیصلہ ہونا باقی ہے۔ دوسری جانب پی ایس ایل سیزن 5اپنی پوری آب و تاب کے ساتھ دنیا بھر میں دیکھا جا رہا ہے، پاکستان کے پر ُ امن ہونے کا اس سے بہتر کیس دنیا کے سامنے رکھنے میں کوئی اور وجہ نہیں ہونی چاہیے۔

پی ایس ایل سیزن 5میں گزشتہ روز لاہور قلندر نے پہلی فتح کا ذائقہ چکھ لیا ہے اس میچ میں شاندار فتح کا کریڈٹ بین ڈنک اور سمت پاٹیل کو جاتا ہے جبکہ اس بار ملتان سلطان نے حیران کن پرفارمنس سے ٹورنامنٹ کی پہلی پوزیشن بھی حاصل کر لی ہے لیکن ابھی میچز باقی ہیں اور دیکھنا یہ ہے کہ ٹیموں کے باقی کے میچز کی حکمت عملی کیا ہوتی ہے جبکہ دیگر ٹیموں میں اسلام آباد یونائٹڈ،کراچی کنگ،کوئٹہ گلیڈی ایٹر،پشاور زلمی نے ابھی تک ٹورنامنٹ میں ایسی پرفارمنس نہیں دی جو وہ پچھلے سیزنز میں دیتے آئے ہیں یہ اور بات ہے کہ ملتان کے حصہ میں چند میچز ہی آئے ہیں لیکن جتنے بھی آئے،وہاں ہوئے میچز سے نا صرف عوام نے ٹیموں کو مکمل سپورٹ کیا جس کے باعث کھلاڑیوں نے بھی سٹیڈیم کا چکر لگا کر، اس کراؤڈ کا شکریہ ادا کیا۔اس کے ساتھ راولپنڈی اور کراچی کا کراؤڈ بھی خاصہ دلچسپی لیتا نظر آیا جبکہ لاہور میں ہونے والے میچز میں شائقین نے ابھی تک اپنا اصل رنگ نہیں دکھایا جس کی وجہ سے لاہور والے مشہور ہیں۔

مزید :

رائے -کالم -