’پاکستانی حکومت کا کورونا ویکسین خریدنے کا کوئی ارادہ نہیں‘ حکومت نے واضح کردیا، عوام کی خوش فہمی دور کردی

’پاکستانی حکومت کا کورونا ویکسین خریدنے کا کوئی ارادہ نہیں‘ حکومت نے واضح ...
’پاکستانی حکومت کا کورونا ویکسین خریدنے کا کوئی ارادہ نہیں‘ حکومت نے واضح کردیا، عوام کی خوش فہمی دور کردی
سورس:   Pixabay

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا بھر کے ممالک میں کورونا وائرس کی ویکسین خریدنے اور اپنے شہریوں کو لگانے کی ایک دوڑ لگی ہوئی ہے مگر پاکستانیوں کو یہ سن کر بہت دکھ ہو گا کہ پی ٹی آئی حکومت مستقبل قریب میں کورونا ویکسین خریدنے کا سرے سے کوئی ارادہ ہی نہیں رکھتی۔ ڈیلی ڈان کے مطابق نیشنل ہیلتھ سروس سیکرٹری عامر اشرف خواجہ نے پبلک اکاﺅنٹس کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی حکومت کاکم از کم رواں سال کے دوران کورونا ویکسین خریدنے کا کوئی منصوبہ نہیں ہے۔ویکسین خریدنے کی بجائے حکومت مختلف ممالک یا عالمی اداروں کی طرف سے عطیہ ملنے والی ویکسین پر ہی اکتفا کرے گی۔ 

عامر اشرف کا کہنا تھا کہ ”چینی فارماسیوٹیکل کمپنی سینوفارم نے پاکستان کو کورونا ویکسین کی 10لاکھ خوراکیں دینے کا وعدہ کیا تھا اور اب تک وہ 5لاکھ خوراکیں پاکستان کو دے چکی ہے۔ان میں سے 2لاکھ 75ہزار خوراکیں ’ہیلتھ آفیشلز‘ کو دی جا چکی ہیں۔ دوسرے مرحلے میں ہسپتالوں اور دیگر طبی مراکز میں کام کرنے والے طبی عملے کو ویکسین دی جائے گی۔65سال یا اس سے زائد عمر کے لوگ بھی خود کو کورونا وائرس کی ویکسین کے لیے رجسٹرڈ کروا سکتے ہیں۔ اس کے لیے انہیں 1166پر میسیج کرنا ہو گا۔“

رپورٹ کے مطابق ایک طرف پاکستانی حکومت کا رواں سال کے دوران کورونا ویکسین خریدنے کا کوئی منصوبہ نہیں ہے لیکن عامر اشرف نے پبلک اکاﺅنٹس کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے یہ ’خوشخبری‘ بھی سنائی ہے کہ حکومت رواں سال 7کروڑ پاکستانیوں کو کورونا ویکسین لگانے کا منصوبہ رکھتی ہے۔نیشنل ہیلتھ سروس سیکرٹری نے پی اے سی کو یہ بھی بتایا کہ ”عالمی تنظیم ’گیوی، دی ویکسین الائنس‘ (Gavi, The Vaccine Alliance)کے توسط سے پاکستان کو بھارت کی بنائی ہوئی ویکسین کی 1کروڑ 60لاکھ خوراکیں مفت ملیں گی۔“

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -کورونا وائرس -