وہ چار طیارے جو دورانِ پرواز غائب ہوگئے اور پھر ان کی کبھی کوئی خبر نہ ملی

وہ چار طیارے جو دورانِ پرواز غائب ہوگئے اور پھر ان کی کبھی کوئی خبر نہ ملی
وہ چار طیارے جو دورانِ پرواز غائب ہوگئے اور پھر ان کی کبھی کوئی خبر نہ ملی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) ہوائی جہازوں کو حادثہ پیش آ جائے تو کم از کم ان کا ملبہ ضرور مل جاتا ہے لیکن اب تک کچھ طیارے دوران پرواز کچھ اس طرح غائب ہو چکے ہیں کہ سالہا سال گزرنے کے بعد بھی ان کی کوئی خبر نہیں مل سکی کہ جیسے وہ آسمان میں ہی کہیں غائب ہو گئے ہوں۔ڈیلی سٹار کے مطابق ان میں ملائیشین ایئرلائنز کی پرواز ایم ایچ 370، فلائٹ 19بھی شامل ہے جو2014ءمیں کوالالمپور سے بیجنگ جانے کے لیے روانہ ہوئی اور راستے میں لاپتہ ہو گئی۔ اس کے متعلق کہا جاتا ہے کہ یہ بحرہند میں گر کر غرق ہو گئی تاہم آج تک حتمی طور پر اس کے متعلق کچھ معلوم نہیں ہو سکا۔ 

1918ءمیں ایک امریکی بحری جہاز ’یو ایس ایس سائیکلوپس‘ برمودا ٹرائی اینگل میں غائب ہو گیا تھا، اس میں عملے کے 306افراد سوار تھے۔ آج ایک صدی سے زائد عرصہ گزرنے کے باوجود اس بحری جہاز کا ملبہ تک نہیں مل سکا۔ 1945ءمیں امریکی فوج کے کچھ بمبار طیارے پراسرار طور پر لاپتہ ہو گئے تھے۔ یہ طیارے بھی بحراوقیانوس میں برمودا ٹرائی اینگل کے قریب لاپتہ ہوئے تھے، جب وہ معمول کے ٹریننگ مشن پر تھے۔ان طیاروں کی تلاش کے لیے ایک اور جہاز روانہ کیا گیا تھا اور وہ بھی کبھی واپس نہیں لوٹا۔ ان تمام طیاروں میں کل 27لوگوں کی جانیں گئی تھیں۔کہا جاتا ہے کہ ان طیاروں کی قیادت لیفٹیننٹ چارلس ٹیلر کر رہے تھے، وہ غلط سمت میں چلے گئے اور تیل ختم ہو جانے پر ان کے طیارے سمندر میں گر کر غرق ہو گئے۔ تاہم ان کے جہاز وں کے ملبے کبھی نہ ملنے پر کہا جاتا ہے کہ وہ برموداٹرائی اینگل میں غرق ہوئے تھے۔ 1962ءمیں ویت نام کی جنگ کے دوران امریکی فوج کی فلائنگ ٹائیگر لائن فلائٹ 739میریانا ٹرینچ کے قریب لاپتہ ہو گئی تھی اور آج تک اس کا کوئی سراغ نہیں مل سکا۔ اس پرواز پر 107لوگ سوار تھے، جن میں اکثریت ایسے آرمی رینجرز کی تھی جنہیں جنگل میں لڑنے کی خصوصی تربیت دی گئی تھی۔1300لوگوں، 48ہوائی جہازوں اور 8بحری جہازوں نے اس طیارے کی تلاش کے لیے سرچ آپریشن کیا اور سمندر میں 1لاکھ 44ہزار مربع میل کا علاقہ چھان مارا لیکن کچھ بھی نہیں مل سکا تھا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -