سگریٹ پیکٹ پر تصویر ی ہیلتھ وارننگ 85فیصد کرنے کا فیصلہ

سگریٹ پیکٹ پر تصویر ی ہیلتھ وارننگ 85فیصد کرنے کا فیصلہ

لاہور(کامرس رپورٹر)سگریٹ پیکٹ پر تصویر ی ہیلتھ وارننگ کو 40فیصد سیّ85فیصد بڑھانے کے فیصلے کے بعد پاکستان کا شمار دنیا کے تین ممالک کی فہرست میں ہوگا۔جبکہ اب تک صرف انڈیا اور تھائی لینڈ میں سگریٹ پیکٹ پر تصویری ہیلتھ وارننگ 85فیصد ہے۔ لیکن انڈیا میں اس نئے قانون پر بحث ہو رہی ہے اوراس فیصلے کو فل حال موخر کر دیا گیا ہے۔ اس طرح پاکستان تھائی لینڈ کے بعد دوسرا ملک ہو گا جہاں 85فیصد تصویری ہیلتھ وارننگ کا قانون نافذ ہو گا۔ کینیڈین ریسرچ سوسائٹی کے مطابق120ممالک میں سگریٹ پیکٹ پر تصویری ہیلتھ وارننگ سے متعلق کوئی قانون موجود نہیں ہے جبکہ بشمول افغانستان 55ممالک میں سگریٹ پیکٹ پر کسی قسم کی کوئی ہیلتھ وارننگ شائع نہیں ہوتی۔ اس کے علاوہ چین ‘کوریا اور جاپان سمیت 66ممالک میں صرف ٹیکسٹ ہیلتھ وارننگ شائع کرنے کا قانون موجود ہے۔ریسرچ کے مزید مطابق اس وقت 23ممالک ایسے ہیں جہاں پر50فیصد سے زائد تصویری ہیلتھ وارننگ شائع کرنے کا قانون موجود ہے جس میں کینیڈا ‘برونائی اور آسٹریلیا کے ممالک شامل ہیں۔مزید براں اس وقت ملائیشیا ‘ہانگ کانگ ‘برازیل ‘سنگاپور اور رومانیہ میں سگریٹ پیکٹ پر 50فیصد سے زائد ہیلتھ وارننگ کا قانون موجود ہے لیکن ان ممالک میں غیر قانونی سگریٹوں کی تجارت کی شرح میں اضافہ ہوا ہے۔ برونائی میں غیر قانونی سگریٹوں کی تجارت کی شرح 93فیصد ‘ملائیشیا 35فیصد‘ہانگ کانگ 33فیصد ‘ کینیڈا 23فیصد ‘سنگاپور 19فیصد اور آسٹریلیا میں14فیصد ہے۔ جبکہ اس وقت انگلینڈ اور آسٹریلیا میں سگریٹ کے حوالے سے سب سے زیادہ قوانین موجود ہیں۔ ایک رپورٹ کے مطابق انگلینڈ میں غیر قانونی سگریٹوں کی تجارت میں اضافہ ہوا ہے جو 2012کے مقابلے میں 2014ء میں 12فیصد سے بڑھ کر 14فیصد ہو گئی ہے۔ تصویر ی ہیلتھ وارننگ

مزید : صفحہ آخر


loading...