شاہ سلمان نے صحافی سے مبینہ بدسلوکی پر شاہی امور کے سربراہ کو عہدے سے ہٹا دیا

شاہ سلمان نے صحافی سے مبینہ بدسلوکی پر شاہی امور کے سربراہ کو عہدے سے ہٹا دیا
شاہ سلمان نے صحافی سے مبینہ بدسلوکی پر شاہی امور کے سربراہ کو عہدے سے ہٹا دیا

  


ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی فرمانرواشاہ سلمان بن عبدالعزیز نے ایک صحافی سے مبینہ بدتمیزی پر خصوصی فرمان کے تحت شاہی امور کے سربراہ محمد الطبیشی کو ان کے عہدے سے ہٹا دیا اور خالد العباد کو شاہی امور کا نیا نگران مقرر کردیا۔

العربیہ کے مطابق محمد الطبیشی کوحال ہی میں مراکشی فرمانروا شاہ محمد ششم کے دورہ سعودی عرب کے موقع پر ایک فوٹو جرنلسٹ کے ساتھ مبینہ بدسلوکی کی بناءپر عہدے سے ہٹایا گیا ہے۔

خالد العباد مکہ مکرمہ میں سنہ 1959ءمیں پیدا ہوئے اور 1982ءشاہ سعود یونیورسٹی سے معاشیات میں گریجوایشن کے بعد 1986ءمیں شاہی مراسم کے شعبے سے منسلک ہوئے اور 2007ءتک شاہی مراسم کے شعبے کے سیکرٹری جنرل کے عہدے پر کام کیا۔

وہ 2007ءسے 2011ءتک شاہی امور کے ڈپٹی انچارج رہے۔ 2011ءسے 2014ءتک شاہی دیوان کے مکہ مکرمہ کے ڈائریکٹر کے طور پر خدمات انجام دیں۔ پچھلے ایک سال سے وہ ولی عہد کے دفتر میں شاہی امور کے شعبے کے سربراہ تھے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...