خراب موسم ڈنگ ٹپاﺅ حکومتی پالیسیاں باغبان بھی زخمو سے چور ،آم پیداوار کم صورتحال سنگین

خراب موسم ڈنگ ٹپاﺅ حکومتی پالیسیاں باغبان بھی زخمو سے چور ،آم پیداوار کم ...

  

ملتان( سپیشل رپورٹر)پنجاب کے کاشتکاروں نے بالعموم اور آم کے باغبانوں نے بالخصوص حکومت کی زرعی پالیسی کو کم فہم اور حقائق سے عاری قرار دیتے ہوئے مایوسی کا اظہار کیا ہے۔ باغبانوں نے متفقہ طور پر کہا کہ حکومتی ادارے اور حکام اعلیٰ زراعت میں ڈنگ ٹپاﺅ پالیسوں اور منصوبوں پر گامزن ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح گذشتہ چار برسوں میں کپاس۔دھان اور گندم کے کاشتکاروں پر مصائب ٹوٹے ہیں پاکستان جوچند برس پہلے دنیا میں آم(بقیہ نمبر38صفحہ7پر )

 کی پیداوار کے لحاظ سے تیسرے نمبر پر تھا آج چھٹے نمبر پر آگیا ہے باغبانوں نے کہا کہ گذشتہ تین برسوں سے آموں کی پیداوار موسمی حالات کی وجہ سے بتدریج کم ہورہی ہے اور باغبان مسلسل خسارے میں ہیں لیکن ان کی بقاءکے لیے نہ کوئی حکومتی اقدامات اٹھائے جارہے ہیں اور نہ ہی زرعی ماہرین کی جانب سے کوئی مثبت تحقیق سامنے آرہی ہے۔ باغبانوں کے نقصانات کی کچھ تلافی کے لیے 25 ایکڑ رقبہ کے باغبان کو 10000ہزار فی ایکٹر امداد دی جائے۔ پوٹاش اور فاسورس کھادوں میں حکومتی سبسڈی سے باغبان کوئی فوائد حاصل نہیں کررہے یہ سبسڈی براہ راست خریداری کے وقت چھوٹے کاشتکاروں کو مہیا کردی جائے۔ باغبانوںنے مطالبہ کیا کہ پاکستان کے بادشاہ پھل ”آم“ کی ایکسپورٹ کے لیے سنجیدگی سے اقدامات اٹھائے جائیں۔باغبانوں اورآم ایکسپورٹر ز کو مراعات اور سہولیات دی جائیں تاکہ زرمبادلہ کو فروغ حاصل ہو۔ کاشتکاروں نے آم کی پھل کی مکھی کو ایکسپورٹ میں سب سے بڑی روکاٹ قرار دیا۔ ملتان میں بین الاقوامی اڈا بننے کے باوجود آم ایکسپورٹ کی سہولیات کا فقدان ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ مینگو پرواسیسنگ اور ہاٹ واٹر ٹریٹمنٹ کے پلانٹ کمرشل بنیادوں پر جنوبی پنجاب میںآم پیدا کرنے والے علاقوں میں قائم کیے جائیں اور ملتان ہوائی اڈا پر جدید کولڈ سٹور کی تنصیب کی جائے۔ کاشتکاروں نے مطالبہ کیا کہ بین الاقوامی ضرورتوں کو مدنظر رکھتے ہوئے آموں کی وویلو ایڈڈ پروڈاکس کی پیداوار کے لیے صنعتکاروں اور سرمایہ کاروں کو مراعات دی جائیں تاکہ وہ آم کے پلپ اور دیگر مصنوعات کے کارخانے لگا سکیں۔ باغبانوں نے بین الاقوامی موسمی تبدیلوں کے نقصانات سے بروقت آگاہ رہنے کے لیے مطالبہ کیا کہ ملتان میں محکمہ موسمیات کا خصوصی دفتر قائم کیا جائے جو بروقت مقامی موسمی تبدیلوں سے کاشتکاروں کو آگاہ رکھے۔ ان خیالات کا اظہار باغبان سید فیاض حسین۔ میاں نعیم عباس۔ میا ں محسن زوار۔ محمد وسیم سید اسد۔ میاں عظیم ریاض نے بھی اجلاس میں شرکت کی 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -