تھیلسیمیا خطرناک بیماری ،شیخ زید ہسپتال میں واک سیمینار

تھیلسیمیا خطرناک بیماری ،شیخ زید ہسپتال میں واک سیمینار

  

رحیم یارخان(بیورو رپورٹ)تھیلیسیمیا کے حوالے سے شیخ زیدہسپتال میں پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر مبارک علی چو ہدری اور میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر غلام ربانی کی سربراہی میں واک اور سیمینار کا انعقاد ہوا۔ واک میں مہمان خصوصی حاجی غلام کبریا اوراسپیشل مہمان شیراز محمود ایڈووکیٹ ،(بقیہ نمبر42صفحہ12پر )

ڈاکٹر شہزاد علی بخاری، پروفیسرڈاکٹر ایم آئی بابر نے شرکت کی۔اس کے علاوہ تمام شعبہ جات کے ہیڈز اور کثیر تعداد میں تھیلیسیمیا کے مریض اور ان کے لواحقین نے شرکت کی، اس موقع پر پرنسپل ڈاکٹر مبارک علی چوہدری نے بتایاکہ تھیلیسیمیا کا مرض موروثی ہے جس سے ہرسال پانچ ہزار سے چھ ہزار بچے ہوتے ہیں اوراس وقت پورے ملک میں اس کی تعداد ایک لاکھ کے قریب ہے اس بچاﺅ ہی ملک سے اس بیماری کا خاتمہ ہے۔پروفیسر شعبہ اطفال پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم لغاری نے کہا کہ تھیلیسیمیا کے مریض کو علاج کے لیے باربار خون لگوانا پڑتا ہے اور باربار خون لگوانے سے ان بچوں میں فولاد کی زیادتی ہوجاتی ہے اوریہ بچے نتیجتاً جگر، دل، شوگراور گلہڑ جیسی بیماریوں کا سامنا بھی کرتے ہیں، تھیلیسیمیا سنٹر شیخ زید ہسپتال ان بچوں کو نہ صرف خون مہیا کرتا ہے بلکہ اس اضافی فولاد کو خارج کرنے کی ادویات بھی مفت فراہم کررہاہے۔ اسسٹنٹ پروفیسر ہیماٹالوجی ڈاکٹر محمد بلال غفور فوکل پرسن تھیلیسیمیا سنٹر نے کہا کہ تھیلیسیمیا سنٹر کی پوری ٹیم اس مرض کی آگاہی مہم پر بہت زوردیتی ہے کیونکہ احتیاط علاج سے بہتر ہے ، میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر غلام ربانی نے پروفیسر ڈاکٹر محمدسلیم لغاری، ہیماٹالوجی کے سربراہ ڈاکٹرمحمد بلال غفور کی تھیلیسیمیا کے بچوں کے لیے خدمات کا قابل ستائش قراردیا کہ یہ دونوں شعبے مل کر ان بچوں کو علاج مہیا کرنے میں کوشاں ہیں، انہوں نے مزید بتایا کہ پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم لغاری ،ڈاکٹر بلال غفور اور اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر راغب اقبال ،ڈاکٹر زاہد بلوچ، ڈاکٹر شکیل اصغر رحیم ےارخان میں موجود مختلف یونیورسٹیوں اور کالجوں میں جاکر تھیلیسیمیا کی بیماری کے بارے میں آگاہی اورشادی سے پہلے تھیلیسیمیا کیریئر کی تشخیص کروانے پربھی بہت زوردیتے ہیں، مہمان خصوصی حاج غلام کبریا نے تھیلیسیمیا سنٹر میں موجود علاج کی سہولیات اور اس کے بچاﺅ کی کوششوں پر ڈاکٹر مبارک علی چوہدری، ڈاکٹر غلام ربانی اور تھیلیسیمیا سنٹرکی پوری ٹیم کو خراج تحسین پیش کیا۔ اور مریضوں کے لیے اپنی خدمات پیش کیں۔اس موقع پر سینئر رجسٹرارچلڈرن وارڈ نمبر 1کنسلٹنٹ ڈاکٹر ملک ریاض احمد کھر، پروفیسر ڈاکٹر محمد عبدالرحمن، پروفیسرڈاکٹر علی برہان مصطفیٰ، ایسویس ایٹ پروفیسر ڈاکٹر عمرفاروق، پروفیسر ڈاکٹر مظہررفیع جام، سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا، ڈاکٹر شبیرعالم، ڈی ایم ایس ڈاکٹر رانا الیاس احمد، ڈاکٹر رانا اشتیاق احمد، ڈاکٹر زاہد محمود، ڈاکٹر ریاض الحق چوہدری، پروفیسر ڈاکٹر محمد انورجمال، ڈاکٹر زاہد محمود بلوچ، ڈاکٹر عامرافضل، ڈاکٹر شکیل اصغر، ڈاکٹر ساجدہ خالد، ڈاکٹر محمد قاسم محمود، ڈاکٹر طارق حسین، مس شمریزہ ذوالفقار، محمد ندیم، مبشر،وقاص ودیگر موجودتھے۔ ورکشاپ کے شرکاءمیں شیلڈز اور سرٹیفکیٹ بھی تقسیم کئے گئے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -