یوٹرن خان کی غلط پالیسیاں، دو ماہ ملک کیلئے انتہائی اہم مشاہد اللہ خان

یوٹرن خان کی غلط پالیسیاں، دو ماہ ملک کیلئے انتہائی اہم مشاہد اللہ خان

  

 ملتان (نیوز رپوٹر ) مسلم لیگ ن کے مر کزی نائب صدر و سینٹر مشاہداللہ خان نے کہا ہے کہ حکومت کو ہوش کے ناخن لینے چا ہئیں ۔یہ حکومت مزید دوماہ رہ گئے تو حالات اس بدترین سطح پر پہنچ جا ئیں گے جس کا سوچا بھی نہیں جا سکتا۔نواز شریف کے دور حکومت میں عمران خان نے 5 سال حکومت گرانے کےلئے جو کام کئے وہ انن ریکارڈ ہیں۔دھرنے کے دوران جن مما لک کے سربراہان کو (بقیہ نمبر16صفحہ12پر )

پا کستان آنے نہ دیا آج ان سے بھیک مانگنے جاتے ہیں اور وہ سربراہان ان کے استقبال کے لئے میونسپل کمیٹیوں کے سربراہان کو بھیجتے ہیں۔مسلم لیگ ن آج انہی کی طرح دھرنا دے سکتی ہے مگر نواز شریف بے کبھی ایسی سیاست نہ کی ہے۔سمجھا جا تا ہے کہ انہوں نے نواز شریف ،شہباز شریف ،مریم نواز،خواجہ آصف،حینف عباسی و دیگر مسلم لیگ ن کے رہنما وں کے خلاف برا کیا ہے مگر درحقیقت انہوں نے پاکستان کا برا حال کیا ہے۔ان کی حکومت میں جو کام ہو ئے وہ دنیا میں کسی حکومت میں نہ ہو ئے۔آج ان کی کیبنٹ میں 25 ارکان غیر منتخب ہیں۔پانامہ میں شامل افراد ا?ج حکومت کے ساتھ شامل ہیں ۔کراچی گو رنر ہاوس میں صدرف عا رف علوی،عامر کیانی نے ادویات مافیا کے ساتھ سودے بازی کی جس کے بعد ملک بھر میں دوائیوں کی قیمت میں 200 گنا اضافہ ہوا ۔انہوں نے اربوں روپے کمائے۔بنی گالہ میں روز رات کو سوداگری ہو تی ہے پیسے کے کر کام کئے جا تے ہیں۔ان خیا لات کااظہار انہوں نے گزشتہ روز ملتان پریس کلب میں پریس کا نفرنس کرتے ہو ئے کیا۔سابق ایم این اے طا رق رشید،سابق ایم پی اے محمد علی کھوکھر،سابق ایم پی اے شہزاد مقبول بھٹہ،سابق ایم پی اے سلطانہ شاہین،بلال بڑ،راو? انور علی و دیگر رہنما بھی ان کے ہمراہ تھے۔مشاہداللہخان نے مزید کہا کہ 2013 میں نوا شریف کو جن حالات میں ملا وہ کسی سے ڈھکا چھپا نہ ہے دہشت گردی عروج پر تھی۔بجلی ،گیس غائب تھی ان حالات میں ملک سنبھالا۔جی ڈی پی ریٹ 7 پرسنٹ کو چھونے والا تھا جس سے ملک نے مزید ترقی کر نی تھی مگر اس دوران پی ٹی آئی نے سول ناگرمانی کی ہر تحری ک چلائی۔جمہوریت کی وبر بنانے کی کو ئی کسر نہ چھوڑی گئی۔سپریم کو رٹ کی دیواروں پر گندی شلواریں لٹکی ہو تی تھیں۔ہم بھی آج یہ کام کر سکتے ہیں مگر نہیں کرتے کیونکہ جمہیوریت کی قد جانتے ہیں۔جھوٹ بولنا پی ٹی ا?ئی کی پالیسی ہے۔وزیر اعظم کہتے ہیں کہ یوٹرن لینا اچھی بات ہے اب بتائیں ان کی اس بات پر کو ن سا ملک اس پر اعتبار کرے گا۔قطری خط کو لے کر دن رات قطر قطر کرتے رہے اور آج انہی سے بھیک مانگنے جارہے ہیںملک مزید ترقی کی جانب گامزن تھا مگر اس دوران پی ٹی ا¿ئی نے سول نافرمانی کی ہر تحریک چلائی۔جمہوریت کی وبر بنانے کی کو ئی کسر نہ چھوڑی گئی۔سپریم کو رٹ کی دیواروں پر گندی شلواریں لٹکی ہو تی تھیں۔ہم بھی ا?ج یہ کام کر سکتے ہیں مگر نہیں کرتے کیونکہ جمہیوریت کی قد جانتے ہیں۔جھوٹ بولنا پی ٹی آئی کی پالیسی ہے۔وزیر اعظم کہتے ہیں کہ یوٹرن لینا اچھی بات ہے اب بتائیں ان کی اس بات پر کو ن سا ملک اس پر اعتبار کرے گا۔قطری خط کو لے کر دن رات قطر قطر کرتے رہے اور آج انہی سے بھیک مانگنے جا رہے ہیں ۔ان کے بارے میں آئی ایم ایف نے کہا کہ یہ بغیر تیاری کے ا?تے ہیں اور بدتمیزی کرتے ہیں۔انہوں نے وزیر اعلی پنجاب کو تنقید کا نشانہ بناتے ہو ئے وسیم اکرم کے لئے اس سے بڑی ذلت کی بات کو ئی ہے کہ عثمان بزدار کا نام اسکے ساتھ ملایا جا تا ہے کو ءشک نہیں۔وسیم اکرم کے بغیر ورلڈ کپ نہیں جیت سکتے تھے۔انہوں نے کہا کہ دو کی بجائے ایک روٹی کھا کھر گزارا کر سکتے ہیں مگر اپنے پیاروں کو دوائی کی مقدار پو ری دینی ہو تی ہو تی ہے۔انہوں نے کہا کہ کے پی کے سکینڈلز سے بھرا پڑا ہے جان بوجھ کر وہاں احتساب نہیں کیا جا رہا ہے تاکہ کو ئی نیا پنڈورا بکس نہ کھل جا ئے۔مالم جبہ کا کیس کیوں نہیں کھولا جا رہا۔آج ای سی ایل میں شامل افراد،ای او بی ا?ئی کے ڈیفالٹر حکومت میں ہیں۔پانامہ کے 456 افراد میں سے 90 فیصد افراد حکومت کے ساتھ ہیں نواز شریف جن کو نکالا گیا ان کا نام بھی شامل تک نہ تھا۔ایک حکومت وزیر کو اربوں کا ٹھیکہ دے دیا گیا ہے جبکہ عمران کہتا تھا کہ حکومتی افراد کو بزنس نہیں کرنے دینا چا ہئے۔انہوں نے کہا کہ دنیا میں کسی مجسٹریٹ،سول جج، اور ریاٹرزڈ جج نے وہ کام نہ کیا جو نثار نے سیٹ پر بیٹھے ہو ئے کئے۔فنڈ ریزنگ مہم میں برطانیہ میں پی ٹی آئی کے رہنما ان کے دائیں بائیں تھے۔انہوں نے کہا کہ حکومت ہر بات پر جھوٹ بول رہی ہے۔محسوس ہو تا ہے ہے کہ عمران خان نے پاکستان کو تھائی لینڈ کی ریاست بنانے کا کہنا تھا مگر غلطی سے مدینے کی ریاست بنانے کا کہہ گئے۔یوٹرن لینے والے سے دنیا کو ئی بات نہ کر ے گی۔انہوں نے کہا دنیا بھر میں حکومت پچھلی حکومت کا قرض اتارتی ہے ،3 ہزار ارب دالر امریکہ نے چائنہ سے قرضہ لیا ہے کبھی ترمہ کو یہ کہتے سنا ہے کہ اوبامہ کا قرضہ اتار رہا ہوں۔انہوں نے کہا یواے ای،قطر،سعو دی ارب اور چائنہ سے انہوں نے پیسے لئے ہیں اور اب ا?ئی ایم ایف سے پیسے لینے کے جا رہے ہیں مگر جی ڈی پی ریٹ خطر ناک حد تک گرتا جا رہا ہے۔سرمایہ دار بھاگ رہا ہے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ 2018ئ کا الیکشن چوری کیا گیا ہے۔

مشاہدہ اللہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -