پیٹرولیم قیمتوں میں اضافے کی سفارش مسترد کی جائے ‘ سابق چیئرمین پی سی سی 

پیٹرولیم قیمتوں میں اضافے کی سفارش مسترد کی جائے ‘ سابق چیئرمین پی سی سی 

لاہور(نیوز رپورٹر)حکومت رمضان المبارک میں مہنگائی کے سیلاب کو روکنے کےلئے ای سی سی کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سفارش کو یکسر مسترد کر دے ، قیمتوں میں اضافے سے 18سے 30ہزار روپے ماہانہ آمدنی والے طبقے کےلئے حساس اشاریوں میں کئی گنا اضافہ ہو جائے گا ،پاکستان خطے میں واحد ملک ہے جہاں لوگوں کی آمدنی میں کمی اور مہنگائی کی شرح میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار پرائس کنٹرول کمیٹی کے سابق چیئرمین میاں عثمان نے صارفین کے حقوق کےلئے قائم تنظیم کے عہدیداروں سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک کی آمد کے پیش نظر حکومت کو اوگرا کی سمری کو اقتصادی رابطہ کمیٹی کو بھجوانے کی بجائے مسترد کر دینا چاہیے تھا ۔ پیٹرولیم مصنوعات پر ٹیکسز کی شرح ہوشربا ہے اس لئے حکومت کو چاہیے کہ رمضان المبارک میں بوجھ عوام پر منتقل کرنے کی بجائے ٹیکسز کی شرح میں 15سے 20فیصد کمی کرے ۔ میاں عثمان نے کہا کہ عوام پیٹرول کی قیمتوں میں ایک روپے اضافے کا بوجھ اٹھانے کے بھی متحمل نہیں ہو سکتے ، اگر حکومت ای سی سی کی سفارش کو من و عن یا اس میں کچھ کمی کر کے تسلیم کرتی ہے تو بھی 18سے 30ہزار روپے ماہانہ آمدنی والے طبقے کےلئے حساس اشاریوں میں کئی گنا اضافہ ہو جائے گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت رمضان بازاروں اور فیئر پرائس شاپس کے حوالے سے عوام کو آگاہی دی ۔اطلاعات کے مطابق حکومت کی جانب سے پیشگی منصوبہ بندی نہ ہونے کی وجہ سے اشیائے خوردونوش ، پھلوں اور سبزیوں کی طلب اور رسد میں تعطل کا خدشہ ہے جس سے گراں فروش فائدہ اٹھا سکتے ہیں ۔

مزید : کامرس