فضلا الرحمان کی سکیورٹی بحال نہ ہوئی تو حالات کی ذمہ دار حکومت ہوگی :مولانا حفیظ الرحمان

فضلا الرحمان کی سکیورٹی بحال نہ ہوئی تو حالات کی ذمہ دار حکومت ہوگی :مولانا ...

  

مٹہ ( نمائندہ پاکستان) جمعیت علماءاسلام کے ضلعی امیر قاری محمود مہتمم شیخ الحدیث مولانا حفیظ الرحمان اور رہنماءڈاکٹر امجد علی نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے جمعیت علماءاسلام کے مرکزی قائد مولانا فضل الرحمان سے سکیورٹی لیکر یہودہ لابی اور قادیانے لابی کو خوش کرنے کیلئے ایک غلط قدم اٹھایا ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے تو کم ہے اگر حکومت نے فوری طور پر مولانا فضل الر حمان کے سکیورٹی بحال نہیں کی تو پھر حالات کی ذمہ داری موجودہ حکومت پر ہوگی ان خیالات کاظہار انہوں نے گذشتہ روز مٹہ پریس کلب میں ایک ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر دیگر قائدین کے علاوہ مولانا عبید اللہ مولانا داودالحسن بھی موجود تھے انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان اس وقت صرف پاکستان کی نہیں بلکے پوری امت مسلمہ کی سیاست اور بات کرتے ہے اور اس وقت وہ پوری اسلامی دنیا کیلئے یہودی اور قادیانی لابی کے سامنے کھڑا ہیں اور موجودہ حکومت کو مولانا فضل الرحمان ان یہودی اور قادیانے لابی کا حصہ قرار دیتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ موجودہ حکومت نے مولانا سے سکیورٹی واپس لی انہوں نے کہا کہ ملک کی ائین میں ہیں کہ کسی بھی شہری کی تحفظ حکومت وقت کی ذمہ داری ہوتی ہیں اسلئے حکومت وقت مولانا فضل الرحمان کی سکیورٹی بحال کریں حکومت اپنے اس فیصلے پر پوری طور پر نظر ثانی کریں انہوں نے کہا کہ بیرونی ممالک میں مولانا فضل الرحمان کو سکیورٹی دینا اور اپنے ملک میں سکیورٹی واپس لینا کیا معنی ٰ رکھتے ہے انہوں نے کہا کہ اگر مولانا فضل الرحمان کو کچھ ہوا تو تمام تر حالات کی ذمہ داری حکومت وقت پر ہوگی اسلئے حکومت فوری طور پر مولانا فضل الرحمان کے سکیورٹی بحال کریں

مزید :

پشاورصفحہ آخر -