ٹی وی چینلز پر ” خصوصی رمضان“ ٹرانسمیشنز کے پروموز شروع

ٹی وی چینلز پر ” خصوصی رمضان“ ٹرانسمیشنز کے پروموز شروع
 ٹی وی چینلز پر ” خصوصی رمضان“ ٹرانسمیشنز کے پروموز شروع

  

لاہور(فلم رپورٹر)پاکستانی ٹی وی چینلز پر آئندہ دو تین روز میں شروع ہونے والی خصوصی رمضان ٹرانسمیشنز کے پروموز آنا شروع ہوچکے ہیں۔ انہیں دیکھ کر اندازہ لگانا مشکل نہیں کہ ناصرف چینلز نے انہیں ہر طریقے سے پرکشش اور کمرشل بنانے کی تمام تیاریاں مکمل کرلی ہیں، بلکہ لگتا کچھ یوں ہے کہ اس بار بھی مختلف چینلز کے درمیان مقابلہ سخت ہوگا۔ ’رمضان ٹرانسمیشن‘ ہرٹی وی چینل کی آمدنی کا سب سے بڑا ذریعہ ہیں۔پی ٹی وی وی سمیت ہر چینل کی کوشش ہے کہ وہ اپنی ٹرانسمیشن کو بہتر سے بہتر بنائے پی ٹی وی کی ٹرانسمیشن کی میزبانی ڈاکٹر عامر لیاقت علی کررہے ہیں جبکہ ہم ٹی وی کے لئے احسن خان کا انتخاب کیا گیا ہے۔بلال قطب بھی نجی چینل کی نشریات کی میزبانی کریں گے۔ احسن خان نے کہا ہے کہ رمضان ٹرانسمیشن میں میزبانی کے فرائض طالبعلم کی حیثیت سے ادا کرتا ہوں ،میں نے کبھی بھی یہ دعویٰ نہیں کہا کہ مجھے دین کے بارے میں بہت کچھ آتا ہے بلکہ میں تو اس کے ذریعے سیکھنے کی کوشش کرتا ہوں ۔ احسن خان نے کہا کہ رمضان ٹرانسمیشن میں دین کے اہم موضوعا ت پرخود سے کبھی کوئی بات نہیں کرتا بلکہ پروگرام میں شرکت کرنے والے علماءسے پوچھتا ہوںاور ان سے سیکھنے کی کوشش کرتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ رمضان ٹرانسمیشن میں میزبانی دین کے بارے میں سیکھنے کا بہترین ذریعہ ہے اور انسان ہر سال بہتر سے بہتر انسان بنتا ہے ۔میں طالبعلم کی حیثیت سے پروگرام کی میزبانی کرتا ہوں ملٹی نیشنل کمپنیز ہوں یا ملکی انڈسٹریز، سب کی پہلی ڈیمانڈ یہی ہوتی ہے کہ ان کے کمرشلز سحر و افطار کی نشریات میں لازماً اور زیادہ سے زیادہ تعداد میں دکھائے جائیں۔ اس کے لئے وہ چھوٹے سے چھوٹے سوالات پر بڑے سے بڑے انعامات بھی دیتے ہیں اور چینلز کو اشتہارات چلانے کے پیسے بھی۔پھر بھلا رمضان ٹرانسمیشن سب سے دلکش اور پرکشش کیوں نہ ہوں،سارے سال کی آمدنی ایک ماہ میں نکل آتی ہے،ان پروگرامز کی میزبانی کرنے کے لئے مذہبی شخصیات سے لے کر شوبز کے گلیمرس سٹارز تک کے درمیان ایک دوسرے سے مقابلے کی دوڑ جاری ہے۔ چند چینلز نے اپنی ٹرانسمیشن اور ان کے ہوسٹس سے پردہ اٹھا دیا ہے، جبکہ کچھ نے ابھی تک راز داری برتی ہوئی ہے۔

مزید :

کلچر -