کورونا وائرس، امریکی تاریخ میں پہلی مرتبہ کیس کی سپریم کورٹ میں ٹیلی کانفرنس سماعت

کورونا وائرس، امریکی تاریخ میں پہلی مرتبہ کیس کی سپریم کورٹ میں ٹیلی ...

  

واشنگٹن (اظہرزمان، بیورو چیف) امریکی تاریخ میں پہلی مرتبہ سپریم کورٹ کے ججوں نے ٹیلی کانفرنس کے ذریعے سوموار کے روز ایک مقدمے کی سماعت کی۔ کورونا وائرس کے باعث سپریم کورٹ کی عمارت کو بند کردیا گیا تھا۔ تاہم بعدمیں فیصلہ ہوا کہ سپریم کورٹ کے جج ٹیلی فون کے ذریعے دوہفتے تک مقدمات کی سماعت کریں گے۔ کارروائی کی صدارت چیف جسٹس جن رابرٹس نے کی، جبکہ کارر و ائی میں ان کا ساتھ دینے والے ججوں میں کلیرنس تھامس، رتھ گنزبرگ، سٹیفن برائر، سیموئیل ایلیٹو، سونیا سوٹو میٹر، ایلینا کاگن، نیل گور سچ اور بریٹ کاواناگ شامل تھے۔ سپریم کورٹ کی روایات کے برعکس مقدمے کی تمام کارروائی کو نہ صرف میڈیا نے سنا، بلکہ سپریم کورٹ کی ویب سائٹ پر ٹیلی فون آڈیو کو عام پبلک نے بھی سنا۔ پہلا مقدمہ ویسے اتنا اہم نہیں تھا،لیکن اپنی منفرد کارروائی کے باعث عام پبلک کی دلچسپی کا باعث بن گیا۔ یہ مقدمہ ٹریول کے شعبے کی معروف کمپنی ”بکنگ ڈاٹ کام“ اور پینٹیٹ اور ٹریڈ مارک رجسٹر کرنیوالے حکومتی شعبے کے درمیان تھا۔ ماتحت عدالتوں نے کمپنی کے نام کی رجسٹریشن کو تسلیم نہیں کیا جس کیخلاف انہوں نے سپریم کورٹ میں اپیل دائر کر دی تھی۔

ٹیلی کانفرنس سماعت

مزید :

صفحہ اول -