اسمارٹ لاک ڈاؤن کی پالیسی بتدریج تبدیل کرنا ہو گی، ڈاکٹر ظفر مرزا

  اسمارٹ لاک ڈاؤن کی پالیسی بتدریج تبدیل کرنا ہو گی، ڈاکٹر ظفر مرزا

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا ہے کہ ہمیں اسمارٹ لاک ڈاؤن کی پالیسی بتدریج تبدیل کرنا ہو گی،ٹائیگر فورس میں شامل ڈاکٹرز کا مشکور ہوں،ایسے وقت میں حکومت کے ساتھ رضاکاروں کی اہم ضرورت ہے،17 ہزار رضا روں کا تعلق صحت کے شعبے سے ہے،آئندہ دنوں میں ٹائیگر فورس کا کردار اہم ہوگا،ڈاکٹرزٹیلی میڈیسن کے ذریعے علاج کرسکیں گے۔کورونا کی موجودہ صورتحال کے حوالے سے وزیراعظم عمران خان کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ٹائیگر فورس میں شامل ڈاکٹرز کا مشکور ہوں،ایسے وقت میں حکومت کے ساتھ رضاکاروں کی اہم ضرورت ہے۔انہوں نے کہاکہ 17 ہزار رضا روں کا تعلق صحت کے شعبے سے ہے،آئندہ دنوں میں ٹائیگر فورس کا کردار اہم ہوگا،ڈاکٹرزٹیلی میڈیسن کے ذریعے علاج کرسکیں گے۔ایک سوال کے جواب میں معاون خصوصی نے کہا کہ کورونا وائرس کتنے عرصے تک رہے گا اور اس کا پھیلاؤ کتنا ہوگا اس کے بارے میں کچھ یقین سے نہیں کہا جاسکتا، جب تک پوری قوم مل کر احتیاطی تدابیر پر عمل نہیں کرتی تب تک ہم اس وبا کا مقابلہ نہیں کرسکتے۔ مشیر صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کی ایران کے وزیر صحت ڈاکٹر نامکی سے ویڈیو لنک پر بات چیت ہوئی جس میں انہوں نے کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے حکومت پاکستان کے اقدامات سے آگاہ کیا۔ترجمان وزارتِ صحت کے مطابق ڈاکٹر نامکی نے ایران کی جانب سے کیے گئے اقدامات پر روشنی ڈالی اور کہا کہ ان کی حکومت نے کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے موثر اقدامات کیے ہیں۔ ایران نے سماجی میل جول میں فاصلہ پر قومی پالیسی بنائی جسے پاکستان کیساتھ شیئر کریں گے۔اس موقع پر معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا تھا کہ پاکستان نے کورونا سے نمٹنے کیلئے بھرپور اور موثر اقدامات کیے، نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر قائم کیا جس میں روزانہ کی بنیاد پر صورتحال کی نگرانی کی جاتی ہے۔ این سی او سی میں متعلقہ وزارتیں، سٹیک ہولڈرز اور عسکری ادارے مل کر اہم فیصلے کرتے ہیں۔ وزیراعظم پاکستان تمام صورتحال کو خود مانیٹر کررہے ہیں۔انہوں نے ایرانی وزیر صحت کو بتایا کہ پاکستان میں پہلا کیس 26 فروری کو رپورٹ ہوا۔ صورتحال کے پیش نظر لاک ڈاؤن سمیت یونیورسٹیوں، کالجز اور سکولوں کو بند کیا جبکہ بڑے بڑے اجتماعات پر پابندی لگائی گئی۔

ظفر مرزا

ڈاکٹر ظفر مرزا

مزید :

صفحہ اول -