مقبوضہ کشمیر، کپواڑہ اور سرینگر میں مجاہدین کے حملے، 3بھارتی فوجی ہلاک، متعدد زخمی

مقبوضہ کشمیر، کپواڑہ اور سرینگر میں مجاہدین کے حملے، 3بھارتی فوجی ہلاک، ...

  

سرینگر(آئی این پی)مقبوضہ کشمیر میں کپواڑہ اور سرینگر میں مجاہدین کے حملے میں بھارتی فوج کے تین اہلکار ہلاک ہوگئے جبکہ ایک مجاہد بھی شہید ہوگیا۔ مقبوضہ کشمیر میں کپواڑہ اور سرینگر میں حریت پسندوں نے سکیورٹی فورسز پر2بڑے حملے کئے۔شمالی کشمیر کے ضلع کپواڑہ میں ہندو اڑہ کے علاقے کرال گنڈ میں حریت پسندوں کے ایک حملے میں ایک نامعلوم حریت پسند شہید اور سی آر پی کے تین اہلکار ہلاک ہوگئے۔اس سے قبل ہندواڑہ میں ضلعی عہدیداروں نے ساوتھ ایشین وائر کو بتایاکہ ایک نامعلوم حریت پسند شہید ہو گیا۔ یہ سی آر پی ایف پارٹی پر حملہ تھا جس کا موثر جواب دیا گیا۔ حریت پسندوں نے سکیورٹی اہلکاروں پر ونگم سٹاپ کے پاس فائرنگ کی، جہاں پر مشترکہ سکیورٹی اہلکاروں نے ناکہ لگایاہوا تھا۔ حملے میں کچھ سکیورٹی اہلکار زخمی ہوئے تھے، جس میں سے تین بعد میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے،سکیو ر ٹی فورسز نے علاقے کو سیل کرکے دیگر حملہ آوروں کی تلاش شروع کردی ہے جبکہ دی ریزسٹنس فرنٹ نے حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ ساؤتھ ایشین وائر کے مطابق یہ حملہ فوج کے ایک کرنل، ایک اہم میجراور دو فوجیوں کی ہلاکت کے ایک دن بعد ہوا۔سرینگر شہر کے مضافات میں واگورہ نوگام کے علاقے میں بھی حریت پسندوں نے سنٹرل انڈسٹریل سکیورٹی فورس کی ایک گشتی پارٹی پر حملہ کیاجس میں ایک سی آئی ایس ایف اہلکار کے زخمی ہوا۔سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے اور حملہ آوروں کی گرفتاری کیلئے تلاش جاری ہے۔ ہندواڑ ہ میں سالوں پرسکون رہنے کے بعد مسلسل دو دن کے دوران 2مہلک حملوں میں بھارتی فوج کے آٹھ جبکہ سی آر پی ایف اور جے کے پی کے 8اہلکاروں کی ہلاکت حکام کیلئے ایک بڑی پریشانی کا باعث ہے۔ تجزیہ کاروں نے کہاہے کہ شمالی کشمیر کے ہندواڑہ بیلٹ میں حریت پسندوں نے دوسرا محاذ کھول دیا ہے۔

مجاہدین حملے

سرینگر(آئی این پی)جموں و کشمیر میں کرونا وائرس سے متاثر افراد کی تعداد میں اضافے کے پیش نظر انتظامیہ نے خطے میں پابندیاں مزید بڑھاتے ہوئے شام سات بجے سے صبح سات بجے تک کرفیو نافذ کرنے کا اعلان کیا ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق جموں وکشمیر انتظامیہ کے ترجمان روہت کنسل نے سماجی رابطہ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی زیر انتظام جموں و کشمیر کے تمام علاقہ جات میں شام سات بجے سے صبح سات بجے تک کرفیو نافذ کیا جائے گا۔القمرآن لائن کے مطابق کرفیو کے دوران ضلعی انتظامیہ کی جانب سے اجرا کیے گئے پاسز کے بنا آمدورفت کی اجازت نہیں ہوگی۔ تاہم طبی پیشہ اور ضروری خدمات فراہم کرنے والے افراد پر یہ پابندی عائد نہیں ہوں گی۔گزشتہ روز انتظامیہ نے جموں و کشمیر کے 13 اضلاع کو ریڈزون زمرے میں لایا تھا۔ کشمیر کے تمام اضلاع کے ساتھ ساتھ جموں صوبے کے جموں، کٹھوعہ اور سامبا بھی شامل ہیں۔ ریاسی، ادھم پور، رامبن اور راجوری اورنج زون میں ہیں جبکہ ڈوڈہ، کشتوار اور پونچھ گرین زون میں ہیں۔

کرفیوکا اعلان

مزید :

صفحہ آخر -