ٹیپوسلطان شہیدؒکی پوری زندگی جرأت و بیباکی کی علامت ہے،شاہد رشید

  ٹیپوسلطان شہیدؒکی پوری زندگی جرأت و بیباکی کی علامت ہے،شاہد رشید

  

لاہور (لیڈی رپورٹر) ٹیپوسلطان شہیدؒکی پوری زندگی جرأت و بیباکی کی علامت ہے۔ انہوں نے اپنے خون سے حریت پسندی کا چراغ روشن رکھا۔ ٹیپو سلطان نے غلامی کی زندگی پر آزادی کی موت کو ترجیح دی۔ ٹیپوسلطان کا یہ قول کہ ”شیر کی ایک دن کی زندگی گیدڑ کی سو سالہ زندگی سے بہتر ہے“ غیرت مند اور حریت پسندوں کیلئے قیامت تک مشعل راہ بنا رہے گا۔ان خیالات کا اظہار سیکرٹری نظریہئ پاکستان ٹرسٹ شاہد رشید نے شیر میسور‘عظیم مسلم فاتح سلطان فتح علی ٹیپو شہیدؒ کے 221ویں یومِ شہادت کے موقع پر منعقدہ خصوصی آن لائن لیکچر کے دوران کیا۔ اس آن لائن لیکچر کا اہتمام نظریہئ پاکستان ٹرسٹ نے تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے اشتراک سے کیا تھا جس کی کارروائی ٹرسٹ کے آفیشل فیس بک پیج اور یو ٹیوب چینل پر دکھائی گئی۔

پروفیسر یوسف عرفان نے اپنے خصوصی آن لائن لیکچر میں کہا کہ کہا نظریہئ پاکستان ٹرسٹ مبارکباد کا مستحق ہے کہ اس نے ہندوستان میں اسلامی تاریخ کے ایک عظیم کردار کا یومِ شہادت منانے کا اہتمام کیا۔ اس عظیم مسلمان حکمران کی زندگی پر ایک طائرانہ نگاہ ڈالنے سے ہی سر فخر سے بلند ہوجاتا ہے کہ اللہ تبارک و تعالیٰ نے برصغیر کے مسلمانوں کو کیسے کیسے عظیم کردار کے مالک رہنما عطا فرمائے تھے۔ ٹیپوسلطان کی شجاعت اور جواں مردی نے انگریزوں کو لرزہ بر اندام کر دیا تھا۔ ٹیپو سلطان ایک کرشماتی شخصیت تھے، وہ انتہائی بہادر اور زیرک سپہ سالار ہونے کے ساتھ ایک عالمی سطح کے لیڈر تھے جنہوں نے اس وقت کی عالمی طاقتوں سے بھی تعلقات قائم کئے تھے۔ ٹیپو سلطان اوائل عمر سے بہادر، حوصلہ مند اور جنگجویانہ صلاحیتوں کے حامل بہترین شہ سوار اور شمشیر زن تھے۔ اپنوں کی غداری سے انہیں شکست کا سامنا کرنا پڑا لیکن انہوں نے ہتھیار ڈالنے کی بجائے شہادت کو ترجیح دی۔ٹیپو سلطانؒ مسلمانان ہند کی ملی تاریخ کا ایک روشن ستارہ ہیں۔ انہوں نے انگریزوں کیخلاف جہاد کومقصد زندگی بنا لیا تھا جس کی خاطر انہوں نے اپنی جان بھی قربان کر دی۔ آج ضرورت اس امر کی ہے کہ ہمارا میڈیا اسلاف کے کارناموں کو زیادہ سے زیادہ اجاگر کرے تاکہ عوام الناس اسلاف کے شاندار کارناموں سے آگاہ ہوسکیں۔ شاہد رشید نے کہا کہ سلطان ٹیپو شہیدؒ نے کارہائے نمایاں سرانجام دیئے اور انہوں نے مسلمانوں کے اندر ایک جوش اور ولولہ پیدا کیا۔وہ انگریزوں کیخلاف فتح یاب تو نہ ہو سکے لیکن ایک ایسی تحریک شروع کردی جس کے نتیجہ میں 1857ء کو جنگ آزادی بھی لڑی گئی۔ٹیپو سلطان کا شمار ان لوگوں میں ہوتا ہے جنہوں نے برصغیر میں مسلمانوں کے زوال کے بعد دوبارہ آزادی لینے کا آغاز کیا اور قائداعظمؒ نے پاکستان بنا کر ٹیپو سلطان شہیدؒ کے مشن کو پورا کیا۔انہوں نے کہا کہ ہم نسل نو کو ان کے شاندار ماضی‘ اسلاف کی عظیم جدوجہد اور ان کی طرف سے قیامِ پاکستان کی خاطر جان و مال کی بیش بہا قربانیوں سے آگاہ کررہے ہیں۔ہم گزشتہ 21سال سے ہر سال ٹیپو سلطان شہیدؒ کا یوم شہادت منا رہے ہیں۔ گزشتہ سال ہم نے اس عظیم ہیرو کی حیات وخدمات پر مبنی پمفلٹ، شہید کے پورٹریٹ پر مشتمل پوسٹر اور ماہنامہ نظریہئ پاکستان کا خصوصی ٹیپو سلطان شہیدؒ نمبر شائع کیا تھا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -