یوٹیلیٹی سٹورز کی ڈرا مہ بازی،پہلے قیمتوں میں اضافہ کیا پھر ریلیف کے نام پر کم کر دیا

یوٹیلیٹی سٹورز کی ڈرا مہ بازی،پہلے قیمتوں میں اضافہ کیا پھر ریلیف کے نام پر ...

  

اسلام آباد(آن لائن)یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن نے رمضان ریلیف پیکج کے نام پر عوام کو لوٹنا شروع کر دیا،انتظامیہ نے ایک دن میں دو نوٹیفکیشن جاری کر کے ڈرامہ بازی کی انتہا کردی پہلے نوٹیفکیشن میں اشیاء مہنگی جبکہ اسی دن کئے گئے دوسرے نوٹیفکیشن میں عوام کو ریلیف دیا گیا، کارپوریشن نے مارکیٹ سے 79روپے کلو چینی خریدکر 68روپے فی کلو فروخت کی اور حکومت کی جانب سے رمضان میں عوام کیلئے دی گئی سبسڈی پر بھی مبینہ طور پر شوگر ملز مالکان کو فائدہ پہنچایا ہے۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ مارکیٹ میں چینی 73سے 74 روپے کلو فروخت ہورہی ہے جبکہ کارپوریشن کی طرف سے گورنمنٹ کو بتایا گیا کہ چینی 79روپے فی کلو خرید کر 68روپے فی کلو فروخت کی جا رہی ہے

دوسری طرف انتظامیہ نے ایک دن میں ہی 4روپے سے لیکر 70روپے قیمت بڑھا کر پھر ان ہی قیمتوں کو اسی دن کم کرکے کر عوام کو رمضان ریلیف پیکج کے نام پر بے وقوف بنانے کی کوشش کی ہے۔ رمضان ریلیف پیکج کے نام پر عوام کے ساتھ ڈرامہ کیا جارہا ہے 17اپریل کو یوٹیلیٹی سٹور کی طرف سے جاری دونوں نوٹیفکیشن نے بھانڈا پھوڑ دیا ایک ہی دن جاری ہونے والے پہلے نوٹیفکیشن میں اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں چار روپے سے لیکر 70روپے تک اضافہ کیا گیا جبکہ اسی دن شام کے وقت جاری ہونے والے دوسرے نوٹیفکیشن میں بڑھائی جانے والی قیمتوں کو کم کرتے ہوئے عوام کے لیے رمضان ریلیف پیکج ظاہر کیا گیا اور جن اشیاء کی قیمتوں میں چار روپے سے لیکر 70روپے تک کا اضافہ کیا گیا تھا ان پر چار روپے سے دس روپے تک کا عوام کو ریلیف دیا گیا ہے 13اپریل کو جاری ہونے نوٹیفکیشن میں بیسن کی قیمت کو 130روپے سے بڑھا کر160روپے کیا گیا تھا جبکہ 12اپریل سے پہلے بھی متعدد اشیا ء کی قیمتوں میں اضافہ کیا جاتا رہا جبکہ بعض اشیاء کی قیمتیں مناسب تھیں 17اپریل دن کو جاری ہونے والے نوٹیفکیشن میں مصالحہ جات سمیت متعدد اشیاء کی قیمتوں میں پہلے دس روپے سے لیکر 70روپے تک کا اضافہ کیا گیا جبکہ اسی دن دوبارہ شام کو نوٹیفکیشن جاری کرتے ہوئے دن کو بڑھائی جانے والے قیمتوں کو کم کرتے ہوئے عوام کو رمضان ریلیف پیکج کے نام پر دھوکا دیا گیا بعض اشیاء جنکی قمیت 70روپے بڑھا کر بھی عوام کو دس سے پندرہ روپے کا ریلیف دیا جارہا ہے دوسری جانب ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ مارکیٹ میں اعلی کوالٹی کی چینی 73سے 74روپے فی کلو فروخت ہورہی ہے جبکہ چیرمین یوٹیلیٹی سٹور کی طرف سے گورنمنٹ کو بتایا گیا کہ 79روپے فی کلو چینی خرید کر 68روپے فی کلو یوٹیلیٹی سٹورز پر فروخت کر رہے ہیں چیرمین یوٹیلٹی سٹور کے اس موقف پر سوال اٹھنا شروع ہوچکے ہیں کہ جواعلی کوالٹی کی چینی مارکیٹ میں 73سے 74روپے فی کلو فروخت ہورہی ہے وہی چینی چیرمین یوٹیلٹی سٹور 79روپے کے حساب سے خرید کر یوٹیلٹی سٹورز پر فروخت کرنے کا گورنمنٹ کو بتا رہے ہیں ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ گھی،دالیں ودیگر معیاری اشیاء کی قیمتیں بھی بڑھا دی گئیں ہیں جب غیر معیاری دالیں،چنے،گھی کی قیمتوں میں کمی کی گئی ہے جنکی فروخت غیرمعیاری ہونے کی وجہ سے یوٹیلٹی سٹورز پر انتہائی کم ہے چیرمین یوٹیلٹی سٹور اور ایم ڈی کے آپس میں اسی وجہ سے اندورنی اختلاف بھی بڑھ چکے ہیں دوسری جانب عوام نے بھی مطالبہ کیا ہے کہ معیاری اشیاء خوردو نوش کی 12اپریل سے پہلے کی قیمتوں کے مطابق کمی لائی جائے ناکہ انہی چیزوں کی 4روپے سے لیکر 70روپے قیمت بڑھا کر پھر ان ہی قیمتوں کو اسی دن کم کرکے کر عوام کو رمضان ریلیف پیکج کے نام پر پاگل نہ بنایا جائے۔

یوٹیلیٹی سٹورز ڈراما

مزید :

علاقائی -