رمضان شوگر ملزکیس میں حمزہ شہباز پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

رمضان شوگر ملزکیس میں حمزہ شہباز پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

  

لاہور(نامہ نگار)حمزہ شہباز کے خلاف رمضان شوگر ملز ریفرنس میں لاک ڈاؤن کی وجہ سے فرد جرم عائد نہ ہوسکی،احتساب عدالت کے جج امجد نذیرچودھری نے کیس کی سماعت 12 مئی تک ملتوی کر دی۔گزشتہ روز احتساب عدالت میں حمزہ شہباز اور قومی اسمبلی میں حزب اختلاف میاں شہباز شریف کے خلاف الگ الگ ریفرنسز پر سماعت ہوئی، جیل حکام نے لاک ڈاؤن کی وجہ سے حمزہ شہباز کو عدالت میں پیش کرنے سے معذوری کا اظہار کیا اور رپورٹ عدالت میں پیش کرتے ہوئے عدالت کوبتایا کہ کرونا وائرس کے خطرات کی وجہ سے حمزہ شہباز کو عدالت میں پیش کرنا ممکن نہیں ہے۔

،دوسری جانب میاں شہباز شریف کے خلاف آشیانہ اقبال ہاؤسنگ ریفرنس پر سماعت ہوئی تو عدالتی استفسار پر نیب کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ہائیکورٹ کا حکم کے تحت ملزموں کی عدم موجودگی میں ٹرائل چل سکتا ہے،میاں شہباز شریف کے وکلا ء کو ٹرائل مکمل کرانے کے لئے تعاون کریں، گزشتہ روزآشیانہ سکینڈل کیس میں فواد حسن فواد نے عدالت میں پیش ہوکر اپنی حاضری مکمل کروائی جبکہ احد خان چیمہسمیت دیگر ملزمان کو کرونا وائرس کے پیش نظر عدالت میں پیش نہ کیا جا سکا،احتساب عدالت نے حمزہ شہباز اور ان کے والد میاں شہباز شریف کے خلاف الگ الگ ریفرنسز پر کارروائی 12 مئی تک ملتوی کردی۔

 ذخیرہ اندوزی ایکیٹ لاک ڈاون کی خلاف ورزی پر ابتک 24 ہزارسے زائد مقدمات لا ہو ر (کر ائم رپو رٹر)صوبہ بھر میں ذخیرہ اندوزی ایکٹ اور جزوی لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرنیوالوں کیخلاف پنجا ب پولیس کی کارروائیاں جاری۔۔تفصیلات کے مطابق پولیس ٹیموں نے 16مارچ سے شروع آپریشن میں صوبے بھر میں 966ناکے لگائے ہیں جہاں اب تک 224723گاڑیوں،529635موٹر سائیکلوں اور1083843شہریوں کو چیک کیا گیا ہے۔ 667589شہریوں کو وارننگ دی گئی، 45203سے سیکیورٹی بانڈزلئے گئے جبکہ دفعہ144کی خلاف ورزی پر23882ایف آئی آرز درج کرتے ہوئے22108 شہری گرفتاراور25302شہری ضمانت پر رہا ہوئے جبکہ قانون کی خلاف ورزی پر4162دوکانوں اور238ریستورانوں کے خلاف کاروائی بھی عمل میں لائی گئی۔اسی طرح ذخیرہ اندوزی ایکٹ کی خلاف ورزی پر837مقدمات درج کرتے ہوئے1339قانون شکنوں کے خلاف کاروائی کی گئی جس کے نتیجے میں 937افراد گرفتار جبکہ 402ضمانت پر رہا ہوئے۔اسی طرح ذخیرہ اندوزوں سے762150کلو گرام گندم، 337765کلو گرام چینی، 250801ماسک، 999سینٹائزر، 28طبی آلات اور 153572دیگر اشیا برآمد کی گئیں۔

16مارچ سے جاری آپریشن کے دوران265356شہریوں کو کورونا سے متعلق آگاہی جبکہ274830شہریوں کو پولیس ٹیموں نے امدادبھی فراہم کی۔گذشتہ روزبھی صوبہ بھر میں 966 ناکے لگائے گئے جہاں 4620گاڑیوں اور11994موٹر سا ئیکلوں کو چیک کیاگیا۔پولیس ناکوں پرچیک کئے گئے 20559شہریوں میں سے14894کو وارننگ دے کر چھوڑا گیا۔ 633شہریوں سے سیکیورٹی بونڈز لئے گئے،410ملزمان گرفتا ر ہوئے جبکہ170نے ضمانتیں کروائیں۔مجموعی طور پر310ایف آئی آر درج کی گئیں جن میں 580ملزمان کو نامزد کیا گیاجبکہ اسی دوران قانون کی خلاف ورزی پر143دوکانوں اور 2ریستورانوں کے خلاف قانونی کاروائی بھی عمل میں لائی گئی۔اسی طرح صوبے بھر میں گذشتہ 24گھنٹوں میں ذخیرہ اندوزی پر18مقدمات درج ہوئے اور26ملزمان کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لائی گئی جن میں سے24گرفتار جبکہ02ضمانت پر رہا ہوئے۔پولیس ٹیموں نے دوران ڈیوٹی 5574شہریوں کوکورونا سے بچا? کے متعلق آگاہی جبکہ 1731شہریوں کو امداد بھی فراہم کی۔ آئی جی پنجاب شعیب دستگیر نے ریجنل اور ضلعی پولیس افسران کو قانون شکنوں کے خلاف کاروائی میں تیزی لانے کی ہدایت دیتے ہوئے تاکید کی ہے کہ پولیس کاروائیوں کے حوالے سے روزانہ کی بنیاد پر رپورٹ سنٹرل پولیس آفس بھجوائی جائے۔انہوں نے مزیدکہاہے کہ فیلڈ ڈیوٹی پرتعینات افسران و اہلکار کورونا وائرس سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیرپر عمل درآمد ہر صورت یقینی بنائیں اورپولیس ٹیمیں شہریوں کی سہولت کیلئے دیگر سرکاری اداروں کے ساتھ مل کروبائی مرض کے تدارک کیلئے ہونے والے اقدامات میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔

مزید :

علاقائی -