مخالفت بڑھ رہی، مسلح تصادم ہوسکتا ہے، چینی انٹیلی جنس رپورٹ منظرعام پر آگئی

مخالفت بڑھ رہی، مسلح تصادم ہوسکتا ہے، چینی انٹیلی جنس رپورٹ منظرعام پر آگئی
مخالفت بڑھ رہی، مسلح تصادم ہوسکتا ہے، چینی انٹیلی جنس رپورٹ منظرعام پر آگئی

  

بیجنگ(ڈیلی پاکستان آن لائن)دنیا بھرمیں کورونا وائرس کے پھیلاو اور امریکا کی جانب سے چین پر الزامات ایک نئی عالمی کشیدگی کا خدشہ ظاہر کرنے لگے ہیں۔امریکا کی جانب سے الزامات کا سلسلہ تو جاری ہے تاہم اس حوالے سے چینی انٹیلی جنس نے ایک رپورٹ پیش کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ امریکا کی قیادت میں چین کے خلاف مخالفت بڑھ رہی ہے، اس حوالے سے چین کو کسی بدترین منظرنامے کیلئے خود کو تیار کرنا لازم ہوگیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق

یہ بدترین منظردوبڑی قوتوں کے درمیان مسلح تصادم ہوسکتا ہے ۔

 یہ رپورٹ چائنہ انسٹی ٹیوٹ آف کانٹیمپریری انٹرنیشنل ریلیشنز نے تیار کیا ہے جو کہ چین کی  وزارت قومی سلامتی کے زیرانتظام کام کرنے والا ایک تھنک ٹینک ہے۔

یہ رپورٹ اپریل کے اوائل میں چینی صدر شی جن پنگ اور دیگر اعلیٰ حکام کے سامنے پیش کی گئی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ چین کے خلاف بڑھتی ہوئی مخالفت  ملک کو امریکا کے مقابلے پر کھڑا کرسکتی ہے۔

یہ رپورٹ ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب امریکا کی جانب سے چین کے ممکنہ احتساب کے حوالے سے دھمکیاں بڑھتی جا رہی ہیں۔

گزشتہ دنوں کے دوران فریقین کی جانب سے الزامات اور ردود عمل کا تبادلہ دیکھنے میں آیا۔ تازہ ترین رد عمل پیر کے روز چین کی جانب سے امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کے بیان پر سامنے آیا۔ اس میں امریکی وزیر کے بیان کو غیر متوازن اور پاگل پن قرار دیا گیا !

امریکا کے علاوہ برطانیہ بھی کورونا وائرس کے پھیلاو کے حوالے سے چین سے تحقیقات کا خواہاں ہے جبکہ کئی یورپی ممالک نے بھی چینی اقدامات پر سوال اٹھائے ہیں۔

امریکا کا کہنا ہے کہ چین نے کورونا وائرس کے اثرات دنیا سے چھپائے اور اسے بروقت دنیا کے سامنے پیش نہیں کیا جبکہ چین ایسے تمام الزامات کی تردید کرتا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -