صدارتی ایواڑ یافتہ قاری نور محمد 88سال کی عمر میں انتقال کر گئے 

صدارتی ایواڑ یافتہ قاری نور محمد 88سال کی عمر میں انتقال کر گئے 

  

 لاہور (خصوصی رپورٹ) صدارتی ایوارڈ یافتہ قاری ریڈیو اورٹیلی ویژن پرپہلی آذان دینے کی سعادت حاصل کرنیوالے قاری نور محمد اعوان علالت کے بعد لاہور میں 88 سال کی عمر میں انتقال کر گئے وہ صدارتی ایوارڈ یافتہ مولانا قاری عبدالماجد نور کے والد تھے مرحوم نصف صدی تک ریڈیو پاکستان پر قرآن مجید کی تلاوت کرتے رہے جب سابق صدر محمدضیا ء الحق مرحوم  کے دور میں ریڈیو،ٹیلی ویژن پر آذان کا آغاز ہوا تو ان دونوں پرپہلی آذان دینے کی سعادت قاری نور محمدمرحوم کو حاصل ہو ئی وہ قاری محمد اسماعیل ؒ اور قاری کریم بخش ؒ کے شاگرد تھے،قاری نور محمد نے دوبیٹے،پانچ بیٹیاں اوراہلیہ سمیت سینکڑوں شاگرد،ہزاروں عقیدت مند ومداح سوگوار چھوڑے مرحوم کی نماز جنازہ ہ نور مسجد جیل روڈ لاہور میں مولانا قاری احمد میاں تھانوی نے پڑھا ئی جس میں عزیزواقارب،علماء وطلباء،مولانا محمد امجد خان،قاری محمدشاہ سمیت بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی بعد میں مرحوم کو ان کے آبائی شہر اٹک میں سپرد خاک کردیا گیا۔ دریں اثناء قاری نور محمد اعوان کی  وفات پر جامعہ اشرفیہ لاہور کے مہتمم مولانا حافظ فضل الرحیم اشرفی، نائب مہتمم و ناظم اعلیٰ مولانا قاری ارشد عبید، نائب مہتمم مولانا احمد حسن اشرفی،مولانا محمد یوسف خان،مولانا محمد اکرم کاشمیری،حافظ اسعد عبید، حافظ اجود عبید، مولانا حافظ زبیر حسن، مولانا فہیم الحسن تھانوی اور مولانا مجیب الرحمن انقلابی نے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ مرحوم کی  تمام زندگی قرآن کی خدمت، تجوید و قرات کے فروغ وراسلام کی اشاعت میں گزری وہ انتہائی متقی،پرہیزگار اورنیک سیرت انسان تھے۔

 قاری نور محمد

مزید :

صفحہ اول -