پی سی جی اے، ٹاسک فورس کاٹن کراپ  بڑھانے کیلئے سرگرم، کاشتکاروں سے ملاقاتیں 

پی سی جی اے، ٹاسک فورس کاٹن کراپ  بڑھانے کیلئے سرگرم، کاشتکاروں سے ملاقاتیں 

  

 ملتان (نیوز رپورٹر) پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین(بقیہ نمبر29صفحہ6پر)

 ڈاکٹر جسومل کی تشکیل کردہ ٹاسک فورس کمیٹی  کا کاٹن کے فروغ کے لیے مختلف اضلاع میں کاشتکاروں سے کپاس اگا معیشت بچا مہم کے تحت ملاقاتوں کا سلسلہ جاری ہے۔کمیٹی نے شبیر کاٹن فیکٹری و رانا کاٹن فیکٹری،    جلالپور پیروالاضلع ملتان میں کاشتکاروں و ذمینداروں کو کاٹن کے فروغ اور معیشت میں اس کی اہمیت کے متعلق آگاہی فراہم کی۔بطور محب وطن پاکستانی کاشتکاروں کی کاٹن کراپ اگانا پہلی ترجیح ہونی چاہیے کیونکہ اس فصل سے کاشتکار کی غمی وخوشی وابستہ ہے۔ پی سی جی اے چیئرمین نے ڈی جی ایگریکلچر کو بھی مراسلہ جاری کیا ہے کہ اس وقت کاٹن بیجائی عروج پر ہے اس لیے کھاد،بیج و پیسٹی سائیڈز ڈیلرز کو لاک ڈان سے مستثنی کیا جائے تاکہ کاٹن بیجائی کے لیے درکار بیج و کھادوں کی با آسانی دستیابی ہو اور کاٹن بیجائی کا عمل متاثر نہ ہو۔این سی او سی بھی اس سلسلہ میں تعاون کرے۔ چیئرمین   پی سی جی اے نے حکومت سے ایک بار پھر 5 ہزار روپے فی من کاٹن کی امدادی قیمت کے فی الفور اعلان کا مطالبہ کیا ہے تاکہ کاٹن کی بیجائی میں مزید اضافہ ہو سکے۔ محکمہ زراعت کے عملی اقدامات، حکومت کا کسانوں کے لیے رعایتی پیکج وزرعی قرضہ سکیم کے اجرا سے کاٹن کراپ بحالی یقینی نظر آرہی ہے اور اس سیزن کپاس پیداوار کے مثبت نتائج متوقع ہیں۔ موسمی حالات کا کاٹن کراپ کے لیے موزوں ہونااور کاٹن کے حالیہ ریٹ کپاس کے کاشتکار کے لیے حوصلہ افزا ہیں۔پی سی جی ا ے چیئرمین کی ہدایت پر ممبران فیلڈ میں کاشتکاروں کے ساتھ رابطہ میں ہیں جس سے کاٹن کاشتکار دوبارہ کاشت کی طرف راغب ہو گیا ہے۔کاٹن کے فروغ سے کاٹن کاشتکار خوشحال اورمعیشت مضبوط ہوگی اورمزیدجننگ اینڈ آئل انڈسٹری کے علاوہ دیگر انڈسٹریز کو بھی فروغ ملے گا۔پی سی جی اے، محکمہ زراعت،       زرعی ترقیاتی بینک و سیڈ کمپنیوں کی ٹیمیں کاٹن کی بحالی کے لیے عملی طور پر فیلڈ میں متحرک ہیں۔

ملاقاتیں 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -