یوم شہادت حضرت علیؓ ملک بھر میں جلوس مجالس، کرونا کے پیش نظر دورانیہ مختصر

یوم شہادت حضرت علیؓ ملک بھر میں جلوس مجالس، کرونا کے پیش نظر دورانیہ مختصر

  

 ملتان، کبیروالا، بہاولپور(سٹی رپورٹروقائع نگار، نامہ نگار، بیورو رپورٹ)رمضان المبارک یوم شہادت حضرت علی ملک بھر(بقیہ نمبر40صفحہ6پر)

 کی طرح ملتان میں بھی انتہائی عقیدت و احترام اور غم کیساتھ منایا گیا - کورونا وائرس کے باعث جلوس میں میں عزاداروں کو محدود پیمانے پر شریک ہونے کی اجازت دی گئی - جبکہ کہ جلوس اور مجلس کا دورانیہ بھی مختصر رکھا گیا - ملتان کی امام بارگاہوں شاہ یوسف گردیز، امام بارگاہ جوادیہ، امام بار گاہ ناصر آباد جھک، امام بار گاہ خلاصی لائن، امام بار گاہ دولت گیٹ، امام بارگاہ زینبیہ سوتری وٹ، امام بارگاہ ممتاز آباد سمیت دیگر میں 18 رمضان المبارک سے مجالس عزا کا سلسلہ شروع ہوا، جو 21 رمضان المبارک تک جاری رہا، جبکہ ملتان کی مختلف امام بارگاہوں سے ماتمی جلوس برآمد کیے گئے، ملتان کے علاقے چھاہ بوہڑ والا میں امام بارگاہ کاشانہ حیدر میں تابوت و ذوالجناح کا مرکزی ماتمی جلوس برآمد ہوا جبکہ امام بارگاہ ناصر آباد جھک سے بھی مرکزی ماتمی جلوس برآمد کیا گیا، جو اپنے مخصوص راستوں صرافہ بازار، مسجد ولی محمد جہاں دوران جلوس مجلس عزا منعقد ہوئی، دوران جلوس دوسری مجلس عزا چوک بازار میں ہوئی- جلوس گلی امام دین سے ہوتا ہوا آستانہ حضرت پیرلعل شاہ پر اختتام پزیر ہوا، جلوس سے قبل امام بارگاہ ناصر آباد جھک میں مجلس عزا منعقد ہوئی ملتان میں دوسرا جلوس صبح 6 بجے امام بارگاہ کاشانہ حیدر چاہ بوہڑ والا ملتان کینٹ سے برآمد ہوکر شیر شاہ روڈ چوک عزیز ہوٹل بومن جی چوک صدر بازار محفوظ چوک سے دوبجے دن امام بار گاہ کاشانہ شبیر لال کرتی پر اختتام پذیر ہوا - جلوس میں عزاداروں کی کثیر تعداد شریک تھی واضع رہے کہ یوم علی کے موقع پر شہر میں 16 مجالس برپا کی گئیں جن میں سے اے کیٹگری کی دو, بی کی نو جبکہ سی کی پانچ مجالس تھی - مجالس اعزا اور جلوسوں کی فول پروف سیکیورٹی کے انتظامات کیے گئے تھے - کاشانہ حیدر  کی جانب آنے والی  تمام گلیاں اور سڑکیں خاردار تاریں اور بیریئرز لگا کر بلاک کر دی گئیں تھی - کورونا وائرس اور حکومتی ہدایات کے پیش نظر مجالس اور جلوسوں کا دورانیہ مختصر رکھا گیا تھا -امیر المومنین،داماد رسول ؐ،خلیفہ چہارم،فاتح خیبرحضرت سیدنا علی کرم اللہ وجھہ الکریم کا یوم شہادت  ملک بھر کی طرح کبیروالا شہر اور گردونواح میں بھی عقیدت واحترام کے ساتھ منایاگیا،مساجد،دینی مدارس اور امام بارگاہوں میں منعقدہ اجتماعات میں علماء کرام اور ذاکرین آپ ؓ کے فضائل،مناقب،سیرت وکردار اور اسلامی خدمات پر روشنی ڈالی۔جامعہ دارالعلوم عیدگاہ کبیروالا میں مولانا ارشاد احمد،مفتی حامد حسن،مفتی اویس ارشاد،جامعہ غوثیہ مہریہ نوریہ کبیروالا صدر مدرس مولانا مفتی عبداللطیف سعیدی،مولانا محمد اجمل چشتی،جامعہ خلفاء راشدین کبیروالا میں مولانا عبدالخالق رحمانی،جامعہ رضویہ شمس العلوم کبیروالا میں علامہ مفتی نصیر الدین نصیر رضوی،جامعہ سراج العلوم عیدگاہ کبیروالا میں مولانا عمرفاروق اصغر،جامعہ غوثیہ رضویہ شمس القرآن اڈا بارہ میل میں مولانا قاری شان محمد قادری،مولانا حافظ عطاء الرحمن قادری،جامع مسجد غوثیہ مین بازار کبیروالا میں مولانا قاری محمد ابراہیم سعیدی،جامع مسجد اہل حدیث کبیروالا میں مولانا عبدالرزاق اور دیگر علماء کرام،آئمہ مساجد،خطباء نے نماز اجتماعات میں امیر المومنین،داماد رسول ؐ،خلیفہ چہارم حضرت سیدنا علیؓکی حیات طیبہ،قرآن وسنت کی روشنی میں فضائل و مناقب اور اسلامی خدمات بیان کیں۔ حضرت علی ؓ کی شہادت کے سلسلہ میں ممبر ڈویژنل وضلعی امن کمیٹی ڈاکٹر شرافت حسین خان بھٹہ کی رہائشگاہ پر ہونے والی شب بیداری پر مجلس عزاسے علامہ سید عاقل رضا زیدی،سید نجم الحسن نوتک،ملک ناہید عباس جگ،سید فرخ عباس شاہ،غلام عباس میثم خطاب کیا جبکہ ملک کے معروف نوحہ خواں قربان جعفری اور ذیشان جعفری نوحہ خوانی اور ماتمی سنگتوں نے عزاداری کی۔ممبر تحصیل امن کمیٹی غلام اکبر خان ایری کے زیر اہتمام ”یوم شہادت“ کے حوالے سے امام بارگاہ ایریاں کبیروالا میں ہونیوالی مجلس عزا سے مولانا منظور حسین صادقی، مہر فیاض حسین سیال،اقبال حسین خان بلوچ،علامہ مبشر حسن عسکری،ذاکر اللہ رکھا حیدری اور دیگر علماء کرام اور ذاکرین خطاب کیا،مجلس عزا کے اختتام پر شبیہ تابوت برآمد کیا گیا اور ماتم داری کی گئی۔محکمہ صحت پنجاب کے احکامات پر یوم شہادت حضرت علی رضی اللہ عنہہ پر گذشتہ روز (21 رمضان،منگل) ملتان سمیت صوبہ بھر کے سرکاری ہسپتالوں میں کسی بھی ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کیلئے ہائی الرٹ رہا۔نشتر ہسپتال،شہباز شریف ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال،سول ہسپتال و دیگر سرکاری ہسپتالوں میں ڈاکٹرز،نرسیں،پیرا میڈیکل سٹاف ہائی الرٹ،کنسلٹنٹ ڈاکٹرز آن کال رہے۔ہسپتالوں میں ایمرجنسی ادویات کا سٹاک،اضافی بستر مختص کرنے کی ہدایت کی گئی تھی یوم شہادت حضر ت علیؓ(21رمضان المبارک)کے حوالہ سے جامع سیکیورٹی پلان ترتیب دیاگیا۔لائسنس داران،امن کمیٹی کے ممبران اور انجمن تاجران کیساتھ میٹنگ کا انعقاد کیاگیا۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرنے ایس ڈی پی اوز اورایس ایچ اوزکے ساتھ میٹنگ کرکے انہیں مجالس اورامام بارگاہوں کی سیکیورٹی فول پروف بنانے کی ہدایت دی۔حکومت کی طرف سے کورونا ایس اوپیزپر عمل درآمد کو یقینی بنانے کے لیے مقامی پولیس نے مجالس کے منتظمین سے مل کر عمل درآمدکو یقینی بنایا۔کسی بھی ایمرجنسی کے پیش نظر پولیس لائن میں ریزرو نفری رکھی گئی اورضلعی دفتر پولیس میں کنڑول روم قائم کیا گیا۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے پولیس فورس کی کارکردگی کو سراہا اورمجالس کے منتظمین،انجمن تاجران،امن کمیٹی کے ممبران اورمیڈیا کے کردار کی تعریف کی۔ 

یوم علیؓ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -