بازاروں،مارکیٹوں میں رش، کرونا مریضوں کی تعداد بڑھنے کا خدشہ

بازاروں،مارکیٹوں میں رش، کرونا مریضوں کی تعداد بڑھنے کا خدشہ

  

ملتان (نیوز رپورٹر)ضلعی انتظامیہ کو شہر کی بڑی مارکیٹوں اور بازاروں میں کورونا ایس او پیز پر عمل کروانے میں ناکامی کا سامنا، کپڑے، جوتے، ریڈی میڈ گارمنٹس اور آرٹیفیشل جیولری کی دکانوں پر  شہریوں کے اژدھام نے حکومتی ہدایات و کورونا ایس او پیز کو ہوا میں (بقیہ نمبر50صفحہ7پر)

 اڑا کر رکھ دیا ہے شہریوں بالخصوص خواتین کی جانب سے سماجی فاصلے کو بھی اہمیت نہیں دی جارہی گلگشت کالونی کی معروف گردیزی مارکیٹ میں تل دھرنے کی جگہ نہیں رہی جبکہ مذکورہ مارکیٹ تنگ گلیوں میں خواتین کا اژدھام کورونا میں اضافے کا باعث بن رہا ہے اور ان بازاروں میں انتظامی اہلکاروں کی عدم تعیناتی ضلعی انتظامیہ کی ناقص کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت ہے گردیزی مارکیٹ کے چاروں طرف سے کاروں اور رکشوں کی یلغار نے اس مارکیٹ کی صورتحال مزید خطرناک بنادی ہے جبکہ ٹریفک بدستور جام رہنا معمول بن کر رہ گیا جبکہ ٹریفک پولیس کی جانب سے چاروں طرف سے آنیوالی ٹریفک کو کنٹرول کرنے کے لیئے اکلوتا وارڈن تعینات کیا گیا جو کہ ٹریفک پولیس حکام کی غفلت اور انتظامیہ کی عدم توجہی کی شاخسانہ ہے دوسری طرف شہری بھی تمام احتیاطی اقدامات اور سماجی فاصلے کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے کورونا کی شرح میں اضافے کا باعث بن رہے ہیں گردیزی مارکیٹ کے صدر تاجر رہنما عارف فصیح اللہ نے کہا ہے کہ رمضان المبارک کے آخری عشرہ میں انتظامیہ کو مزید اقدامات کرنے چاہیئیں بالخصوص گردیزی مارکیٹ کو آنیوالے تمام راستوں کو گاڑیوں اور رکشوں کی آمدورفت بند کر کے مختلف اشیا کی خریداری کے لیئے آنیوالے شہریوں کو مشکلات سے بچایا جاسکتا ہے علاوہ ازیں اس آخری عشرہ میں انتظامی نفری بھی بڑھائی جائے تاکہ شہری جیب تراشوں اور دیگر جرائم پیشہ عناصر سے محفوظ رہتے ہوئے سکون سے خریداری کرسکیں۔

خدشہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -